ترکی کی طرف سے امریکی پارٹس اور الیکٹرانک مشین کا بائکاٹ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 15 اگست, 2018
0

ترکی کی طرف سے امریکی پارٹس اور الیکٹرانک مشین کا بائکاٹ

انقرہ کا کہنا کہ ترکی لیرہ کی قیمت میں گراوٹ سیاست کی وجہ سے ہے نہ کہ اس کی بنیاد اقتصاد ہے

انقرہ: سعید عبد الرازق

          انقرہ نے واشنگٹن کے ساتھ مسئلہ کو مزید پیچیدہ کر دیا ہے اور کل ترکی صدر رجب طیب اردوگان نے الیکٹرانک مشینوں کا بائکاٹ کرنے کا اعلان کیا ہے جبکہ ان کی حکومت کے وزیر نے کہا کہ ان کا ملک امریکہ کے سارے پارٹس کا بائکاٹ کرے گا۔

        اردوگان نے کہا کہ ان کا ملک اس امریکہ کے سارے سامانوں کا بائکاٹ کرے گا جس نے پابندیاں عائد کیا ہے اور انقرہ پر کسٹمس ٹکس میں اضافہ کر دیا ہے اور اسی کی وجہ سے اقتصاد میں زبردست گراوٹ آئی ہے اور اس کی وجہ سے ترکی لیرہ کی قیمت میں غیر معمولی کمی آئی ہے اور کل حکومت کرنے والی پارٹی سولہویں سالگرہ کے موقع پر انقرہ میں منعقدہ ایک پروگرام کے ضمن میں ہونے والی اپنی گفتگو کے دوران مزید کہا کہ ترکی عنقریب سامان تیار کرے گا اور دوسرے ملک بھی سپلائی اس سے بہترین صورت میں کرے گا جو وہ غیر ملکی کرنسی میں خریدتا ہے اور کہا کہ اگر آئفون ہے تو اس کے مقابلہ سیمسنگ ہے اور ہمارے پاس اسی طرح فیسٹل ہے اور اردوگان نے اس بات کا اعتراف کیا کہ ترکی معیشت کو ابھی مشکلات کا سامنا ہے جس کی وجہ سے حالیہ حساب میں غیر معمولی کمی ہے اور اس کی فیصد 16 ہے لیکن انہوں نے مزید کہا کہ ہماری معیشت گھڑی کی طرح کام کر رہی ہے۔

بدھ – 04 ذی الحجہ 1439 ہجری – 15 اگست 2018ء شمارہ نمبر (14505)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>