بصرہ کے پانی سے اہل بصرہ جاں بحق۔۔ سیستانی کی طرف سے انتباہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: ہفتہ, 25 اگست, 2018
0

بصرہ کے پانی سے اہل بصرہ جاں بحق۔۔ سیستانی کی طرف سے انتباہ

 

بصرہ میں خراب خدمات کے خلاف احتجاجی مظاہرے کے منظر کو دیکھا جا سکتا ہے (ا،ب)

 بغداد: حمزہ مصطفی

عراق کے اعلی شیعی مرجع خلائق علی سیستانی کے ترجمان نے بصرہ کے اندر پینے کے پانی کے بحران کی سنگینی سے باخبر کیا ہے کیونکہ اس میں بہت زیادہ گندگی کی وجہ سے گورنریٹ کے باشندوں کی جان جا رہی ہے اور بصرہ کے گورنر نے گورنریٹ کی مشکلات کو حل نہ کئے جانے کی وجہ سے وزیر اعظم حیدر العبادی کی تنقید کی ہے۔

 مرجع خلائق شیخ عبد المہدی کربلائی کے ترجمان نے خطبۂ جمعہ کے دوران کہا ہے کہ پینے کے پانی کا شدید فقدان ہے اور انسانی استعمال کے لئے اس میں سیلان کی صلاحیت بھی نہیں ہے اور باشندوں کی شکایتیں مسلسل بڑھ رہی ہیں حتی کہ اس کی وجہ سے یہاں کے باشندے جلد کے امراض اور پوائزن  سے دوچار ہو رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ رہنماء کی طرف سے کی جانے والی اپیل کے باوجود اس پریشانی کو حل کرنے کے سلسلہ میں کی جانے والی کوششیں ابھی بھی بہت کم ہیں۔

اسی سلسلہ میں بصرہ کے گورنر اسعد العیدانی نے العبادی کی حکومت کو زبردست تنقید کا نشانہ بنایا ہے اور اس حکومت پر الزام لگایا ہے کہ اس نے بصرہ کے شہریوں کے مطالبات کو مکمل نہیں کیا ہے اور یہ بھی کہا کہ وزیر اعظم حیدر العبادی، وزارتی کمیٹی اور نائب وزیر خزانہ سے ہونے والی ہماری گفتگو اور پیش کردہ مطالبہ کے باوجود افسوس کی بات ہے کہ ابھی تک تو ہمیں کچھ نہیں ملا اور انہون نے یہ بھی کہا کہ گورنریٹ میں معاملہ ہمارے شہر کے بچوں اور اہل وعیال کی روحوں کے لئے بہت خطرناک ہو چکا ہے۔(۔۔۔)

 

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>