قیاسی سطح تک ترکی لیرہ میں گراوٹ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: ہفتہ, 1 ستمبر, 2018
0

قیاسی سطح تک ترکی لیرہ میں گراوٹ

انقرہ: "الشرق الاوسط”

       روئٹرز ایجنسی نے بتایا کہ کل ترکی کے صدر رجب طیب اردوگان نے کہا کہ ان کے ملک کے خلاف مغرب کی طرف سے اعلان کردہ اقتصادی جنگ اس کے اقتصاد کو کرنسی کے بحران کی وجہ سے ختم نہیں کر سکے گا جبکہ اس سے قبل ترکی لیرہ میں چالیس فیصد گراوٹ کا مشاہدہ کیا گیا ہے اور کل اس کی قیمت قیاسی سطح تک پہنچ چکی ہے کہ ایک امریکی ڈالر کے مقابلہ میں اس کی قیمت 6.7 ہے۔

      اردوگان نے ملک کے مغربی شمال میں واقع بالک اسیر کے علاقہ میں اپنے حامیوں کے سامنے کہا کہ اگر ان کے پاس ڈالر ہیں تو ہمارے پاس ہمارا اللہ ہے اور اسی طرح انہوں نے کریڈٹ ریٹنگ ایجنسیوں کے بارے میں کہا کہ وہ جھوٹے اور لٹیرے ہیں اور انہوں نے اہل ترکی کو آمادہ کیا کہ انہیں ان ایجنسیوں کے موازنات کی طرف توجہ دینے کی ضرورت نہیں ہے۔

     اسی اثناء ترکی کی صدارت نے کل صبح ترکی لیرہ کے ذریعہ ڈپازٹس پر ٹیکس کم کرنے کا فیصلہ جاری کیا ہے اور اناضول ایجنسی کے مطابق اس فیصلہ میں اس بات کا تذکرہ ہے کہ ترکی لیرہ کے ذریعہ ڈپازٹز پر ٹیکس کو کم کیا گیا ہے اور ایک سال گزرنے والے ڈپازٹس پر ٹیکس زیرو کر دیا گیا ہے۔

ہفتہ – 21 ذی الحجہ 1439 ہجری – 01 ستمبر 2018ء شمارہ نمبر (14522)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>