حوثی کے دوسرے وزیر کی علیحدگی اور تیسرے کے سلسلہ میں ابہام - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 14 نومبر, 2018
0

حوثی کے دوسرے وزیر کی علیحدگی اور تیسرے کے سلسلہ میں ابہام

کل قانونی حکومت ایک کے فوج کو مشرقی حدیدہ کی سڑک پر کھڑا دیکھا جا سکتا ہے

جدہ: اسماء الغابری صنعاء: "الشرق الاوسط”

        حوثی حکومت میں تکنیکی تربیت اور ہروفیشنل تعلیم کے وزیر محسن النقیب نے اپنی علیحدگی کا اعلان کیا ہے اور اس اعلان اور حدیدہ شہر میں مسلسل ملنے والی میدانی سکشت کی وجہ سے باغی جماعت میں کھلبلی مچ چکی ہے اور نقیب نے سعودی عرب پہنچنے کے بعد الشرق الاوسط سے کہا کہ انہوں نے میلیشیاؤں کے ساتھ کام کرنے کے دوران اپنے کام میں حوثیوں کی مداخلت کا انکار کیا تھا کیونکہ یہ ان کے منصوبہ میں رکاوٹ پیدا کر رہی تھی۔

      یہ اعلان حوثیوں کے میڈیا کے وزیر عبد السلام جابر کے علیحدہ ہو کر سعودی عرب کی دار الحکومت ریاض پہنچنے کے چند دنوں کے بعد ہوا ہے اور انہوں نے قانونی حکومت کے ساتھ ضم ہونے کا اعلان کیا ہے۔

      اسی سے متعلق ایک مسئلہ میں یمنی حکومت کے ایک وزیر صلاح الصیادی نے اپنے فیسبک پیج پر انکشاف کیا کہ حوثی رہنماء اور باغی حکامت کے نوجوان اور کھیل کے وزیر حسن زید نے ان سے قانونی حکومت کے پاس سفارش کرنے کا مطالبہ کیا تاکہ علیحدہ ہونا آسان ہو سکے لیکن انہوں نے اس سے انکار کر دیا۔

      میدانی طور پر حدیدہ میں ڈر کے ساتھ سکون کا ماحول ہے جبکہ اقوام متحدہ کے سفیر مارٹن گریفتھ نے پرزور انداز میں کہا کہ اقوام متحدہ شہر کے سلسلہ میں ایک معاہدہ تک پہنچنے کے لئے زمہ دار فریقوں سے از سر نو گفتگو کرنے کے لئے تیار ہے۔

بدھ 06 ربیع الاول 1440 ہجری – 14 نومبر 2018ء – شمارہ نمبر [14596]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>