حدیدہ سے متعلق اقوام متحدہ کے تجویزات پر یمن کی طرف سے تحفظات کا رویہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 25 نومبر, 2018
0

حدیدہ سے متعلق اقوام متحدہ کے تجویزات پر یمن کی طرف سے تحفظات کا رویہ

جمعہ کے دن اقوام متحدہ کے سفیر کو حدیدہ کے دورہ کے دوران اس طرح دیکھا جا سکتا ہے کہ ان کے پیچھے بندرگاہ ہے

قاہرہ: علی ربیع

       اقوام متحدہ نے اعلان کیا ہے کہ وہ حدیدہ بندرگاہ کے سلسلہ میں رول ادا کرنے کے لئے تیار ہے اور اس کے سفیر مارٹن گریفتھ وہاں کا دورہ بھی کریں گے اور یمن کے رہنماء وزراء اور سرگرم افراد نے بندرگاہ کو کسی تیسرے کے حوالہ کرنے سے متعلق تجویزات کے مضامین پر تحفظ اختیار کیا ہے اور خاص طور پر ایسے وقت میں جب سرکاری حکومت کی فورسز بندرگاہ کو دوبارہ حاصل کرنے کے قریب ہیں۔

       گریفتھ نے صنعاء میں ایران کے ہمنواء جماعت کے رہنماؤں کے ساتھ تین دن گزارنے کے بعد وہاں سے روانہ ہو گئے ہیں اور ان کا یہ سفر دسمبر میں سویڈن کے اندر ہونے والے مذاکرات میں میلیشیاؤں کے وفد کی حاضری سے متعلق ترتیبات اور حدیدہ بندرگاہ سے متعلق منصوبہ بندی کی تفصیلات کے سلسلہ میں مشورہ کرنے کے لئے تھا۔

       اقوام متحدہ کے مصادر کے ذریعہ انکشاف کے مطابق ریاض اور مسقط دونوں سفیر کی نگاہ میں ہیں جہاں سویڈن کے مذاکرات کے لئے آسانی پیدا کرنے سے متعلق مشورہ کرنے کے لئے قانونی حکومت کے رہنماء اور حوثی افراد جمع ہو سکتے ہیں۔

       ان تنقیدوں کے باوجود اقوام متحدہ کے سفیر اور مغربی حلقوں کا کہنا ہے کہ حدیدہ میں مسلسل جنگ بندی کی وجہ سے شہر کے اندر انسانوں کی پریشانی مزید بڑھ جائے گی اور اس کے علاوہ دیگر خطرات بھی ہیں جو بندرگاہ کے بند ہونے کی وجہ سے ظاہر ہو سکتے ہیں۔

اتوار 17 ربیع الاول 1440 ہجری – 25 نومبر 2018ء – شمارہ نمبر [14507]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>