سویڈن کے مذاکرات میں قیدیوں اور حدیدہ موضوع گفتگو - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعرات, 6 دسمبر, 2018
0

سویڈن کے مذاکرات میں قیدیوں اور حدیدہ موضوع گفتگو

سویڈن کے یوہانسبرگ میں ہونے والے یمنی مذاکرات کے پیش نظر شاہی محل کے باہر سیکورٹی رکاوٹوں کو دیکھا جا سکتا ہے

اوبسالا (سویڈن): بدر القحطانی

       یمن کی طرف بھیجے گئے اقوام متحدہ کے سفیر مارٹن گریفتھ نے کل شام اعلان کیا ہے کہ سویڈن کی دار الحکومت اسٹوکہولوم سے باہر یوہانسبرگ کے محل میں یمن کے سلامتی مذاکرات شروع ہوں گے لیکن سرکاری اجلاسات آج ایک پریس کانفرنس کے ذریعہ شروع ہوں گے جس میں سویڈن کی خاتون وزیر خارجہ مارگو والسٹروم بھی شریک ہوں گے۔

      مذاکرات کے قریبی ذرائع نے "الشرق الاوسط” سے بتایا ہے کہ گریفتھ نے کل پہنچنے والے قانونی حکومت کے وفد کے ساتھ غیر سرکاری ملاقاتیں کی ہے اور دو دن قبل پہنچنے والے حوثیوں کے وفد کے ساتھ عنقریب ملاقاتیں ہوں گی اور ذرائع نے یہ بھی ذکر کیا کہ کام کے مجموعہ کی شکل میں مذاکرات آج شروع ہوں گے اور شروع مذاکرات میں اس بات پر توجہ مرکوز کی جائے گی قیدیوں کو آزاد کرنے کے معاہدہ کو کیسے نافذ کیا جائے اور حدیدہ میں کیسے کشیدگی کو کم کیا جائے۔

        مذاکرات کے سلسلہ میں کوئی وقت متعین نہیں کیا گیا ہے لیکن کچھ معلومات حاصل ہوئی ہیں جن سے معلوم ہوتا ہے کہ اس ماہ کی 14 تاریخ مذاکرات کی آخری تاریخ ہے اور اقوام متحدہ کے سفیر کی امید ہے کہ وہ آئندہ براہ راست بحران کے دونوں فریق کے دمیان مذاکرات کریں گے۔

       یمن کے باخبر ذرائع نے ظاہر کیا ہے کہ وہ اس طریقہ کی تحفظ چاہتے ہیں جسے گریفتھ اپنان چاہتے ہیں اور یہ بھی کہا کہ کوئی ایسی چیز نہیں ہے جس کا نام کام کا مجموعہ ہے اور حکومت کا فریق ایک فریق کی طرح مذاکرہ کرے گا اور سفیر کا ماننا ہے کہ حل کے تجزئہ کا طریقہ کامیاب ہوگا اور یہ ہرگز نہیں ہوگا۔

       اسی سلسلہ میں یمن کے وزیر خارجہ خالد الیمانی نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ سنجیدگی کے ساتھ حوثیوں کی طرف سے قیدیوں کو آزاد کرنے کے منصوبہ کی تصدیق کریں اور انہوں الشرق الاوسط سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومتی وفد حوثیوں کے پاس تمام قیدیوں کو رہا کرنے کا مطالبہ کرے گا اور انہوں نے مزید کہا کہ ہم قیدیوں کی فہرستوں کے سلسلہ میں تبادلہ کریں گے تاکہ ان سب کی شناخت کی جا سکے۔

جمعرات 28 ربیع الاول 1440 ہجری – 06 دسمبر 2018ء – شمارہ نمبر [14618]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>