مغربی کنارہ میں جنگ کا ماحول اور اسرائیل کی طرف سے دوسری مرتبہ کشیدگی کے خدشات - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعہ, 14 دسمبر, 2018
0

مغربی کنارہ میں جنگ کا ماحول اور اسرائیل کی طرف سے دوسری مرتبہ کشیدگی کے خدشات

رام اللہ میں اسرائیلی فوجیوں کو پتھر سے مارنے کے لئے مظاہرہ کرنے والی ایک فلسطینی لڑکی کو تیار دیکھا جا سکتا ہے

رام اللہ ۔ تل ابیب: "الشرق الاوسط”

         کل اسرائیل نے رام اللہ کا مکمل طور پر محاصرہ کر لیا ہے اور اس نے وہاں کی عوام کو شہر میں داخل ہونے یا وہاں سے نکلنے سے بالکل روک دیا ہے اور قابض فورسز نے ایسی سرگرمیاں انجام دی ہیں کہ مغربی کنارہ مکمل طور پر جنگ کا میدان بن چکا ہے اور دوبارہ غیر معمولی کشیدگی پربا ہو گئی ہے جس میں دو اسرائیلی فوجی ہلاک ہوئے ہیں اور فلسطینین نوجوانوں کی گولیوں سے دو فوجی زخمی بھی ہوئے ہیں اور یہ حملہ اسرائیلی فورسز کی طرف سے چار فلسطینیوں کی شہادت اور دو کے زخمی ہونے کے بعد کیا گیا ہے اور اسرائیل کی طرف سے کی جانے والی اس کاروائی میں عشوائی طور پر لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

       سنہ 2002 میں مرحوم صدر یاسر عرفات کو ان کے گھر میں قید بند کرنے بعد یہ پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ مغربی کنارہ کی کشیدگی نے تیسری مرتبہ ہونے والی جنگ کے سلسلہ میں اسرائیل کے خدشات میں اضافہ کر دیا ہے اور اسرائیل میں مخالف جماعت کی خاتون صدر ٹسیبی لیفنی نے حکومت اور اس کے صدر بنیامین نٹن یاہو کو حالات کے دگرگوں ہونے کا ذمہ دار قرار دیا ہے اور اس بات کی طرف اشارہ کیا ہے کہ اس دہشت گردی کا مقابلہ کرنے کے سلسلہ میں وہ فوج کے ساتھ ہیں اور اسی طرح فلسطینی حکومت نے بھی اس تشدد کی ذمہ داری تل ابیب پر لگائی ہے۔

جمعہ 06 ربیع الثانی 1440 ہجری – 14 دسمبر 2018ء – شمارہ نمبر [14626]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>