بشیر کی طرف سے دمشق کا دورہ ۔۔۔ اور عرب ومغرب ممالک میں خاموشی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: منگل, 18 دسمبر, 2018
0

بشیر کی طرف سے دمشق کا دورہ ۔۔۔ اور عرب ومغرب ممالک میں خاموشی

ماسکو: رائد جبر خرطوم: احمد یونس انقرہ: سعید عبد الرازق

         ماسکو نے پرسو سوڈان کے صدر عمر بشیر کی طرف سے دمشق کے دورہ کا استقبال کیا ہے جبکہ ریوولوشن کے بعد سے شام کی دار الحکومت کی طرف پہلے عرب رہنماء کی طرف سے ہونے والے اس دورہ کے سلسلہ میں عرب اور مغربی ممالک نے خاموشی کا مظاہرہ کیا ہے۔

       روس کی وزارت خارجہ نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ سنہ 2011ء میں عرب لیگ کے اندر شام کی رکنیت کو معلق کرنے کے بعد ایک عرب ملک کے صدر کی طرف سے کئت جانے والے دورہ کا استقبال کرتی ہے اور بیان میں مزید یہ بھی کہا گیا ہے کہ ہم یہ امید کرتے ہیں کہ عرب ممالک اور شام کے درمیان تعلقات اس دورہ کی وجہ سے بحال ہوں گے اور بہت جلد شام کو عرب لیگ میں رکنیت بھی مل جائے گی۔

       اشارہ یہ بھی مل رہا ہے کہ بشیر کی طرف سے کئے جانے والے شام کے دورہ نے روس کے ذرائع ابلاغ کے اندر ایک ادھم مچا رکھا ہے جبکہ بعض ذرائع ابلاغ کے ذریعہ اس بات کی بھی خبر مل رہی ہے کہ وہ دمشق کے بین الاقوامی ایئرپورٹ پر 154 ٹوبولیو نامی فوجی جہاز کے ذریعہ پہنچے ہیں اور اسی طرح اس بات کی بھی اطلاع ہے کہ  صدر بشار الاسد روسی جہاز کے ذریعہ روس کئی مرتبہ گئے ہیں۔

      خرطوم میں اس بات کی اطلاع ملی ہے کہ سانا نامی شام کی سرکاری نیوز ایجنسی نے سوڈان کی وزارت خارجہ کے ترجمان کے لئے اس اچانک خبر کو خراب کر دیا جسے انہوں نے بشیر کے اس دورہ کے بعد صحافیوں کے لئے تیار کیا تھا جو ایک راز تھا۔

منگل 10 ربیع الثانی 1440 ہجری – 18 دسمبر 2018ء – شمارہ نمبر [14630]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>