حدیدہ معاہدہ کو جلد کرنے کے لئے ریاض میں گریفتھ اور کومارٹ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعرات, 24 جنوری, 2019
0

حدیدہ معاہدہ کو جلد کرنے کے لئے ریاض میں گریفتھ اور کومارٹ

لندن ۔ صنعاء: "الشرق الاوسط”

         یمن کی طرف بھیجے گئے اقوام متحدہ کے سفیر مارٹن گریفتھ نے حدیدہ میں دوبارہ فورسز کو متعین کرنے والی کمیٹی کے صدر ہالینڈ کے جنرل پیٹریک کومارٹ کے ساتھ ریاض کی طرف توجہ کیا ہے کیونکہ اقوام متحدہ حدیدہ شہر کے سلسلہ میں اس معاہدہ کو جلد مکمل کرنا چاہتی ہے جو سویڈن مذاکرات میں مکمل ہوا ہے اور اقوام متحدہ کے باخبر ذرائع نے الشرق الاوسط کو بتایا ہے کہ دوباری فورسز کو متعین کرنے کی کمیٹی کو جن رکاوٹوں اور دھمکیوں کا ساننا ہے ان کے بعد قانونی رہنماؤں کے ساتھ اقوام متحدہ کے زمہ داروں کی ملاقات میں یمن کے باہر حدیدہ اجلاسات کو منتقل کرنے کے سلسلہ میں گفتگو ہوگی اور گریفتھ یمنی حکومت کے ساتھ ہونے والی گفتگو میں اپنی طرف سے حدیدہ، تعز اور  قیدیوں کے مسائل پر اپنی توجہ مرکوز کریں گے۔

       حدیدہ معاہدہ سے متعلق کل شام العربیہ نامی نیوز چینل نے یمن میں قانون کی حمایت کرنے والے اتحاد کے ذریعہ نقل کیا ہے کہ حوثیوں نے جنگ بندی کے نفاذ ہونے کے بعد بھی معاہدہ کی خلاف ورزی 741 مرتبہ کیا ہے۔(۔۔۔)

جمعرات 18 جمادی الاول 1440 ہجری – 24 جنوری 2019ء – شمارہ نمبر [14667]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>