لبنانی بوعزیزی آگ کا شکار - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: ہفتہ, 9 فروری, 2019
0

لبنانی بوعزیزی آگ کا شکار

جورج زریق اور ان کی بیٹی کو دیکھا جا سکتا ہے

بیروت: "الشرق الاوسط”

        سیدی بو زید صوبہ کے ہیڈ کواٹر کے سامنے اپنے آپ کو جلا کر ٹیونس میں عوامی بغاوت پیدا کرنے والے ٹیونسی نوجوان محمد بوعزیزی کے طریقہ پر لبنان کے شمال میں واقع ایک مدرسہ کے احاطہ کے اندر لبنانی شہری جورج زریق نے کل اپنے آپ کو آگ کے حوالہ کر دیا۔

       خبر یہ مل رہی ہے کہ اس اسکول سے دوسرے اسکول کی طرف اپنی بچی کو منتقل کرنے لئے لازمی کاغذ نہ ملنے کی صورت میں احتجاج کرتے ہوئے اپنے آپ کو جلا دیا اور یہ سب اس وجہ سے ہوا کہ اس کی مالی حالت اچھی نہیں تھی اور اس کے اوپر مدرسہ کا فیس بہت زیادہ ہو چکا تھا اور ہاسپٹل منتقل کئے جانے کے فورا بعد ہی وہ اس دنیا سے رخصت ہو گیا۔

       عالی تعلیم وتربیت کے وزیر اکرم شہیب نے الشرق الاوسط کے ساتھ کی جانے والی گفتگو میں کہا کہ اس معاملہ کا تعلق لازمی کاغذ کے نہ ملنے سے نہیں ہے کیونکہ وزارت تربیت نے فیس نہ دینے والے طلبہ کے لئے وزارت کی طرف سے فیس دیا ہے اور انہوں نے اشارہ کیا کہ اس معاملہ کی مزید تحقیق کی جائے گی تاکہ حقیقی اسباب تک پہنچا جا سکے اور یہ اعلان بھی کیا کہ وہ مرحوم کی بچی کی تعلیم کی ذمہ داری وہ لے رہے ہیں۔

      شروع سال سے اب تک نکلنے والے چار تحریری اعلان کے بعد انتظامیہ نے اعلان کیا کہ اس نے طلبہ کے تمام والدین کو اسکول آنے کی دعوت دی ہے تاکہ وہ اپنے بچوں سے متعلق انتظامی اور مالی امور کو حل کر لیں اور کسی بھی طالب علم کو اسکول سے نہیں نکالا جائے گا۔

ہفتہ 04 جمادی الآخر 1440 ہجری – 09 فروری 2019ء – شمارہ نمبر [14683]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>