سعودی عرب کی طرف سے لبنان سفر کے انتباہ کا اختتام - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعرات, 14 فروری, 2019
0

سعودی عرب کی طرف سے لبنان سفر کے انتباہ کا اختتام

بیروت: "الشرق الاوسط”

         کل سعودی عرب نے لبنان کی طرف سفر کرنے کے ان انتباہات کو ختم کر دیا ہے جسے اس نے اپنے شہریوں کے لئے وضع کیا تھا اور یہ فیصلہ سیکورٹی صورت حال کے امن واستقرار اور سعودی عرب کے شہریوں کے امن وامان کے سلسلہ میں سعودی عرب کو لبنانی حکومت کی طرف سے ملنے والی اطمینان کے بعد لیا گیا ہے۔ لبنان کی طرف سفر کرنے کے انتباہات کو ختم کیے جانے کا اعلان بیروت کے اندر سعودی عرب کے سفیر ولید بخاری کی زبانی اس ملاقات کے بعد ہوا جب کل سعودی عرب کے وفد نے شاہی دیوان کے مشیر کار نزار ابن سلیمان العلولا اور لبنانی حکومت کے صدر سعد الحریری سے ملاقات کی۔

       مشیر کار العولا نے صدر مائکل عون، نبیہ بری اور سعد الحریری کے ساتھ سرکاری طور پر ملاقات کرکے ان سے اس معاملہ میں گفت وشنید کی اور شاہی وفد نے پرزور انداز میں کہا کہ سعودی عرب لبنان کے ساتھ ہے اور وہ دونوں ملکوں کے درمیان بھائی چارہ کے تعلقات کو فروغ دینے کے لئے تمام میدانوں میں اس کی مدد کرنے کے لئے بھی تیار ہے اور العولا نے بیروت کے اندر چند فائلوں اور مسائل کے سلسلہ میں گفت وشنید کی اور ان میں سب سے اہم دونوں ملکوں کے درمیان مشترکہ کمیٹی کی تیاری کرنی ہے اور تمام سرکاری اداروں اور تنظیموں کے اندر اہل فن کو سعودی عرب اپنے ہم منصب سے ملاقات کرنے کے لئے بھیجنا ہے۔

جمعرات 09 جمادی الآخر 1440 ہجری – 14 فروری 2019ء – شمارہ نمبر [14688]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>