ٹرمپ کی طرف سے یمن میں اتحاد کی کاروائیوں کی مدد نہ کرنے کے کانگریس کے فیصلہ کے خلاف ویٹو کے ذریعہ دھمکی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعرات, 14 فروری, 2019
0

ٹرمپ کی طرف سے یمن میں اتحاد کی کاروائیوں کی مدد نہ کرنے کے کانگریس کے فیصلہ کے خلاف ویٹو کے ذریعہ دھمکی

واشنگٹن: ہبہ القدسی ۔ عدن: علی ربیع ۔ جدہ: سعید الابیض

        امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے اعلان کیا کہ وہ یمن میں اتحاد کی کاروائیوں کی مدد نہ کرنے کے سلسلہ میں کل امریکی پارلیمنٹ کے فیصلہ کو ختم کرنے کے سلسلہ میں صدارتی ویٹو پاور کا استعمال کریں گے اور یاد رہے کہ کل پارلیمنٹ نے ایک فیصلہ جاری کیا ہے جس سے 248 اراکین نے اتفاق رائے کیا اور 177 اراکین نے اتفاق نہیں کیا۔

      نئے چیلنج کے سلسلہ میں حوثی میلیشیاؤں نے یمن کے اندر امن وسلامتی کی کوششوں پر اس وقت ضرب لگائی جب انہوں نے دوبارہ بحر احمر کی چکی کے اندر گیہوں کے خزانہ کو نشانہ بنایا اور اسی وقت وہاں اقوام متحدہ کے بڑے بگراں موجود تھے اور ان میں ڈنمارک کے جنرل مائکل لولیسگارڈ بھی موجود تھے کیونکہ وہ وہاں اسٹوکہولوم معاہدہ کے سلسلہ میں گئے ہوئے تھے۔

      اقوام متحدہ کی طرف سے حوثیوں کو ملنے والی ان دھمکیوں کا کوئی فائدہ نہیں ہوا جن میں خزانہ کے اندر موجود اس پورے میٹیریل کو ختم کرنے کی بات کی گئی تھی جو 3.7 ملین افراد کے لئے کافی تھا اور کل حوثی میلیشیاؤں نے گیہوں کے ایک جھونپڑی کے قریب ایک گولا پھینک دیا اور یاد رہے کہ اس کاروائی سے یہ بات واضح ہو چکی ہے کہ اس جماعت کو اقوام متحدہ کی دھمکیوں کی کوئی پرواہ نہیں ہے اور کارندے ان جھونپڑیوں تک نہیں پہنچ سکے کیونکہ اس جماعت نے ان کے راستوں کو بند کر دیا تھا۔

جمعرات 09 جمادی الآخر 1440 ہجری – 14 فروری 2019ء – شمارہ نمبر [14688]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>