حجور کا علاقہ مشتعل اور یہاں کے قبائل حوثی فورسز کے روبرو - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: ہفتہ, 16 فروری, 2019
0

حجور کا علاقہ مشتعل اور یہاں کے قبائل حوثی فورسز کے روبرو

سعودی عرب کی طرف سے اقوام متحدہ کے گیہوں گودام تک پہنچنے کے سلسلہ میں پیدا کی جانے والی رکاوٹوں کی مذمت

عدن: علی ربیع

        کل یمن کے حجہ گورنریٹ کے حجور فرنٹ پر جنگ سخت ہو چکی ہے اور تین ہفتہ قبل علاقہ کے قبائل اور حوثیوں کے درمیان ہونے والی جھڑپوں کے آغاز کے بعد سے کشر علاقہ کے مشرق میں حوثی فورسز کی غیر معمولی نقل وحرکت دیکھنے کو ملی ہے۔

        میدانی ذرائع نے "الشرق الاوسط” کو بتایا ہے کہ کم سے کم 25 حوثی اہلکار ہلاک اور دسیوں افراد قبائل کے افراد کے ذریعہ قید اور زخمی ہوئے ہیں جبکہ یمنی فوج نے کشر علاقہ سے محاصرہ کو ختم کرنے کے مقصد سے وسیع پیمانہ پر فوجی کاروائی شروع کرنے اور شمال سے حجہ گورنریٹ سمیت حدیدہ تک کے علاقہ کو آزاد کرنے کا اعلان کیا ہے۔

      اسی سلسلہ میں حدیدہ میں فورسز کو دوبارہ متعین کرنے کی کمیٹی کے صدر ہالینڈ کے جنرل پیٹریک کومارٹ نے ہالینڈ کے الوولکس گرانٹ میگزین کے ساتھ دئے جانے والے انٹرویو میں پرزور انداز میں کہا کہ بحر احمر کے آٹا چکی کے اندر بیس فیصد دانوں کو حوثیوں کے گولے کی آگ سے برباد کر دیا گیا ہے۔

ہفتہ 11 جمادی الآخر 1440 ہجری – 16 فروری 2019ء – شمارہ نمبر [14690]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>