یمن میں امن سلامتی کے راستہ میں رکاوٹ پیدا کرنے والوں کو فرانس کی طرف سے انتباہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 20 فروری, 2019
0

یمن میں امن سلامتی کے راستہ میں رکاوٹ پیدا کرنے والوں کو فرانس کی طرف سے انتباہ

نیو یارک میں امن وسلامتی کی کمیٹی کے اراکین کے ساتھ ویڈیو کے ذریعہ گفتگو کرتے ہوئے مارٹن گریفتھ کو دیکھا جا سکتا ہے

نیو یارک: علی بردی ۔ عدن: علی ربیع

        یمن کی طرف بھیجے گئے اقوام متحدہ کے سفیر مارٹن گریفتھ نے دستخط کر دیا ہے کہ عنقریب ہی حدیدہ میں دوبارہ فورس کو متعین کر دیا جائے گا اور اس بات کی امید بھی کی ہے کہ یہ اقدام ملک کی سیاسی کاروائی کا آغاز ہوگا۔

      گریفتھ نے امن وسلامتی کمیٹی کے اراکین کو بتایا کہ دونوں فریق نے پہلے مرحلہ میں راس عیسی اور صلیف کی بندرگاہوں میں دوبارہ فوج کو متعین کرنے کی منظوری دے دی ہے اور اس کے بعد دوسرا مرحلہ ہوگا جس میں حدیدہ کی بندرگاہ اور شہر کے دیگر حساس علاقوں میں فورس متعین کئے جائیں گے جہاں لوگوں کی کمپنیاں قائم ہیں اور انہوں نے تاکید کے ساتھ کہا کہ ایک سیاسی حل کی بہت ضرورت ہے۔

      اگلے ماہ مارچ کے دوران امن وسلامتی کمیٹی کی صدارت حاصل کرنے والے ملک فرانس کے نمائندہ نے کہا کہ حدیدہ میں صورتحال اب تک دگرگوں ہے۔۔۔۔ اور ہم ان کاروائیوں کے تسلسل کی وجہ سے پریشان اور فکر مند ہیں اور مزید برآں یہ کہ بیلسٹک میزائل کا خطرہ مسلسل لگا ہوا ہے اور انہوں نے پرزور انداز میں کہا کہ ان اداروں اور افراد پر پابندیاں عائد کرنا ضروری ہے جو اسٹوکہولوم معاہدہ کو نافذ کرنے کے سلسلہ میں رکاوٹ پیدا کر رہے ہیں۔(۔۔۔)

بدھ 15 جمادی الآخر 1440 ہجری – 20 فروری 2019ء – شمارہ نمبر [14694]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>