ٹرمپ: گولان کی پہاڑی پر اسرائیل کی سیادت کے اعتراف کرنے کا وقت آچکا ہے - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعہ, 22 مارچ, 2019
0

ٹرمپ: گولان کی پہاڑی پر اسرائیل کی سیادت کے اعتراف کرنے کا وقت آچکا ہے

دمشق کے درمیان حمیدیہ بازار میں پوٹن اور اسد کی تصویروں کو دیکھا جا سکتا ہے

واشنگٹن: ہبہ القدسی قاہرہ: سوسن ابو حسن

        کل امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے اعلان کیا کہ ریاستہائے متحدہ سنہ 1967ء سے شام کے مقبوضہ گولان پہاڑی پر اسرائیلی سیادت کا عنقریب اعتراف کرے گا اور ٹرمپ نے ٹویٹر پر ٹویٹ کیا کہ اس گولان پہاڑی پر اسرائیل کی مکمل دسترس کا اعتراف کرنے کا وقت آچکا ہے جسے علاقائی امن واستقرار اور اسرائیلی حکومت کے لئے بہت زیادہ اسٹریٹیجک اور سیکورٹی اہمیت حاصل ہے۔(۔۔۔)

      اسی سلسلہ میں نٹن یاہو نے اپنے ٹویٹر پر لکھا کہ ابھی جب ایران اسرائیل کو برباد کرنے کے لئے شام کو ایک اسٹیج کے طور پر استعمال کرنا چاہتا ہے اس وقت امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی طرف سے اسرائیل کی سیادت کا اعتراف ایک بہت بڑا فیصلہ ہے لہذا ہم صدر ٹرمپ کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔

      عرب لیگ کے جنرل سیکرٹری احمد ابو الغیط امریکی صدر کے نئے موقف کو بین الاقوامی قانون سے کارج قرار دیا ہے۔

     شامی وزارت خارجہ نے ٹرمپ کے اس اقدام کی مذمت کی ہے اور کہا کہ امریکی انتظامیہ کی طرف سے یہ فیصلہ اس کی دسترس اور قبضہ کی فکر کی غماز ہے اور اس بات کی طرف بھی اشارہ ہے کہ امریکی انتظامیہ اسرائیلی مفادات کی خدمت انجام دے رہی ہے۔(۔۔۔)

جمعہ 15 رجب المرجب 1440 ہجری – 22 مارچ 2019ء – شمارہ نمبر [14724]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>