سرکاری طور پر بوتفلیقہ علیحدہ اور فوج کے کمانڈر کی طرف سے صدر کے قریبی لوگوں پر حملہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 3 اپریل, 2019
0

سرکاری طور پر بوتفلیقہ علیحدہ اور فوج کے کمانڈر کی طرف سے صدر کے قریبی لوگوں پر حملہ

کل جزائر میں سرکاری طور پر بوتفلیقہ کے استعفی دینے سے قبل طلبہ کی ریلی کو انتظامیہ پر دباؤ ڈالتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے

جزائر: کمیل الطویل اور بوعلام غمراسہ

        جزائر کی نیوز ایجنسی نے اعلان کیا کہ صدر عبد العزیز بوتفلیقہ نے دستوری کمیٹی کے صدر کو کل شام اپنی صدارت کی مدت کے ختم ہونے کے فیصلہ کی خبر دے دی ہے اور یہ اقدام فوج کے کمانڈر کرنل احمد قاید صالح کی طرف سے صدر کے ارد گرد لوگوں پر ہونے والے سخت حملہ کے بعد ہوا ہے جس میں انہوں نے ان لوگوں کو ایک ایسی جماعت کے نام سے ذکر کیا ہے جس نے ملک کو لوٹ لیا ہے اور حکومت پر قبضہ کر لیا ہے اور انہوں نے ان سے فوری طور پر حکومت سے دستبردار ہونے کا مطالبہ کیا ہے۔

       سرکاری طور پر استعفی دینے کے بعد جزائر کی دار الحکومت میں لوگوں کو صدر کی علیحدگی پر خوشی مناتے ہوئے دیکھا گیا ہے اور گاڑیوں نے بھی خوب ہارن بجائے ہیں لیکن نگاہیں سڑک کے موقف پر لگی ہے اور خاص طور پر جو کچھ جمعہ کے دن ہوا اس پر تو ساری نگاہیں جمی ہیں۔

      اب انتظار ہے کہ استعفی دینے والے صدر کے منصب کے خالی ہونے کا اعلان کرنے کے لئے دستوری کمیٹی منعقد ہوگی اور اس وقت دستوری طور رپ حکومت قومی اسمبلی کے صدر عبد القادر ابن صالح کی ذمہ داری میں ہے لیکن انہوں نے اس عوامی تحریک کی وجہ سے اسے قبول کرنے سے انکار کر دیا ہے کہ کہیں وہ لوگ ان کا امتحان نہ لینے لگ جائیں۔(۔۔۔)

بدھ 27 رجب المرجب 1440 ہجری – 03 اپریل 2019ء – شمارہ نمبر [14736]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>