ايران کو کنٹرول کرنے کے لئے امریکہ، روس اور اسرائیل کے درمیان اجلاس - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 2 جون, 2019
0

ايران کو کنٹرول کرنے کے لئے امریکہ، روس اور اسرائیل کے درمیان اجلاس

گزشتہ سال 12 دسمبر کو حميميم فوجی اڈہ کا دورہ کرتے ہوئے روسی صدر ولادیمیر پوٹن کو دیکھا جا سکتا ہے

لندن: ابراہیم حمیدی

     مغربی بیت المقدس میں چند دنوں کے بعد امریکی قومی سلامتی کونسل کے صدر جان بولٹن اور ان کے روسی ہم منصب نکولائی پیٹروشیو اور اسرائیلی ہم منصب میئر بین شباٹ ایک اجلاس میں شامل ہوں گے اور شامی فائل میں شامل تینوں ممالک کے نمائندوں کے درمیان یہ اپنی نوعیت کا پہلا اجلاس ہے.

     مغربی سفارتی ذرائع نے کل الشرق الأوسط کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شام میں ایرانی موجودگی کے مستقبل کا مسئلہ کو مشرق وسطی میں علاقائی امن وسلامتی کے سلسلہ میں ہونے والی بات چیت سے متعلق ایک عمومی عنوان کے تحت کاموں کی ترتیب میں مرکزی فائل کی حیثیت سے دیکھا جائے گا اور ان ذرائع نے اس بات کی طرف بھی اشارہ کیا کہ یہ ملاقات دونوں امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ اور روسی صدر ولادیمیر پوٹن کے درمیان ہونے والے اس افہام وتفہیم کی بنیاد پر ہوئی ہے جس میں وزیر اعظم بنیامن نیٹن یاہو کی حمایت اور اسرائیل کی سلامتی کو یقینی بنانے کو ترجیح دینے کی بات کہی گئی ہے۔(۔۔۔)

اتوار 28 رمضان المبارک 1440 ہجری – 02 جون 2019ء – شمارہ نمبر [14796]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>