سوڈان میں نافرمانی کے پہلے دن مکمل ہڑتال - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: پیر, 10 جون, 2019
0

سوڈان میں نافرمانی کے پہلے دن مکمل ہڑتال

کل خرطوم میں سڑک کی صورتحال کی نگرانی کرتے ہوئے سوڈانی فوجیوں کو دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)

خرطوم: احمد یونس اور محمد امین یاسین – لندن: مصطفی سیر

     کل شہری نافرمانی کے پہلے دن سوڈان کی دار الحکومت خرطوم میں مکمل طور پر ہڑتال کی صورتحال کو دیکھا گیا ہے، بڑے پیمانہ پر نقل وحرکت کم ہو گئی ہے، اکثر وبیشتر گاڑیاں بھی بند ہو چکی ہیں اور بینک اور نجی اداروں کو بھی بند کر دیا گیا ہے۔

     انتقالی فوجی کونسل نے مسلح افواج اور فوری تعاون فورسز کی سیکیورٹی وجود کو بڑھا دینے، زندگی کو اپنے معمول کے مطابق کرنے، گاڑیوں اور لوگوں کی نقل وحرکت کو آسان بنانے، سڑکوں کو کھولنے اور عام سہولیات اور مارکیٹوں کو تحفظ فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے، تاہم کونسل نے ایک بیان میں کل یہ کہا گيا کہ آزادی اور تبدیلی کے رہنماؤں کی طرف سے نافرمانی کی دی جانے والی دعوت کو مقبولیت نہیں ملی ہے اور ان پر فوری تعاون فورسز کے خلاف آمدگی کرنے کا الزام بھی لگایا گیا ہے۔

    دوسری طرف فوجی کونسل نے سیکورٹی اور انٹیلی جنس کے ادارہ میں وسیع ترمیم کی ہے جن کی بنیاد پر90 افسران کی چھٹی کر دی ہے۔

پیر 06 شوال المکرم 1440 ہجری – 10 جون 2019ء – شمارہ نمبر [14804]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>