ایرانی کشتی کے سلسلہ میں شرط کے ساتھ برطانیہ کے موقف میں نرمی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 14 جولائی, 2019
0

ایرانی کشتی کے سلسلہ میں شرط کے ساتھ برطانیہ کے موقف میں نرمی

اس ماہ کے چھ تاریخ کو گریس ون نامی ایرانی ٹینکر کو طارق پہاڑ کے قریب دیکھا جا سکتا ہے

لندن: الشرق الاوسط ۔ نیویارک: علی بردی

      کل برطانیہ نے طارق پہاڑ میں روکی گئی ایرانی تیل کے ٹینکر کے سلسلہ میں نرمی کا موقف اختیار کرتے ہوئے شرائط کے ساتھ اس کے چھوڑے جانے کی آسانی پیش کیا ہے۔

     کل برطانوی وزیر خارجہ جیرمی ہنٹ نے کہا کہ انہوں نے اپنے ایرانی ہم منصب محمد جواد ظریف کو اطلاع دے دی ہے کہ برطانیہ گریس ون کو چھوڑنے کے سلسلہ میں آسانی پیش کرنا چاہتا ہے لیکن شرط یہ ہے کہ وہ شام کا رخ نہیں کرے گا اور ہنٹ نے مزید کہا کہ ایرانی وزیر خارجہ نے انہیں بتایا ہے کہ تہران ٹینکر کے مسئلہ کو حل کرنا چاہتا ہے اور وہ موقف کو مزید سنگین نہیں کرنا چاہتا ہے۔

      اسی درمیان ایرانی وزیر خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ ظریف نے کل اقوام متحدہ کے دو بلند پایہ سماجی اور معاشی کونسل کے سالانہ اجلاس میں شرکت کرنے کے لئے نیو یارک کا رخ کیا ہے اور یہ سفر ایسے وقت میں ہوا ہے کہ ایک طرف ریاستہائے متحدہ اور برطانیہ کے درمیان کشیدگی اور دوسری طرف ایران کے درمیان کشیدگی ہے۔(۔۔۔)

اتوار 11 ذی قعدہ 1440 ہجری – 14 جولائی 2019ء – شمارہ نمبر [14838]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>