سوڈانی تحریک کی طرف سے "مکمل استسنائيت" کا انکار - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 17 جولائی, 2019
0

سوڈانی تحریک کی طرف سے "مکمل استسنائيت” کا انکار

"پیشہ ورانہ جماعت” کے رہنماء اسماعيل التاج کو دیکھا جا سکتا ہے

خرطوم: احمد یونس

      سوڈان پیشہ ورانہ جماعت نے بڑی سختی کے ساتھ انتقالی فوجی کونسل کے اس فیصلے کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے جس میں مزيد تین مہینے کے لئے ہنگامی صورتحال کی بات کی گئی ہے اور اسی کے ساتھ اس جماعت نے اس فیصلہ کے خاتمے کا مطالبہ کیا ہے اور اسی طرح اس جماعت نے آئینی اعلامیہ کے اس مسودہ کا بھی بائکاٹ کیا ہے جس میں "مکمل استسنائيت” کی بات کی گئی ہے۔

     انتقالی فوجی کونسل کے سربراہ عبد الفتاح البرهان نے پرسو ایک بیان جاری کیا ہے جس میں ملک کے اندر مزید تین مہینے کے لئے ہنگامی صورتحال کو بڑھا دیا ہے لیکن اس توسیع کے لئے کوئی جواز نہیں پیش کیا ہے۔

     ایسا لگ رہا ہے کہ "مکمل استسنائيت” کا یہ دستاویز سوڈانی تحریک نمائندگی کرنے والی آزادی اور تبدیلی پارٹی کے رہنماؤں اور انتقالی فوجی کونسل کے درمیان حتمی معاہدے تک پہنچنے کے راستہ کے لئے اہم رکاوٹ ہے۔

بدھ 14 ذی قعدہ 1440 ہجری – 17 جولائی 2019ء – شمارہ نمبر [14841]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>