تہران کی طرف سے راستہ کی امن وسلامتی کے لئے بین الاقوامی نقل وحرکت کو چیلنج - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: بدھ, 24 جولائی, 2019
0

تہران کی طرف سے راستہ کی امن وسلامتی کے لئے بین الاقوامی نقل وحرکت کو چیلنج

کل سانٹاکروز میں بولیوی کے صدر ایوو مورالس کو ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کا استقبال کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے

لندن: عادل السالمی ۔ نیوم  (سعودی عرب): الشرق الاوسط

      ایک طرف ایران نے خلیجی پانی کے راستوں کی امن وسلامتی کے لئے کی جانے والی بین الاقوامی نقل وحرکت کو چیلنج کیا ہے تو دوسری طرف سعودی عرب کی وزارتی کمیٹی نے خادم حرمین شریفین شاہ سلمان ابن عبد العزیز کی صدارت میں علاقہ کی بحری ایویگیشن کی آزادی کی اہمیت پر زور دیا ہے اور بین الاقوامی سماج کو ہر کوشش کا جواب دینے کی دعوت بھی دی ہے۔

      کل ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے کہا کہ ان کا ملک مقابلہ کرنے کی کوشش نہیں کر رہا ہے لیکن خلیج کے اوپر ہمارے پاس ایک ہزار پانچ سو لمبائی میں ساحل موجود ہے اور یہ ہمارا پانی ہے اور ہم اس کی حمایت کریں گے۔ ان کا یہ جواب اس وقت آیا جب برطانیہ نے علاقہ کے اندر ایویگیشن کی امن وسلامتی کی حفاظت کرنے کے لئے یورپی طاقت کو تشکیل دینے کے اپنے عزم وارادہ کا اظہار کیا اور برطانیہ نے یہ فیصلہ گذشتہ جمعہ کے دن تہران کی طرف سے اس تیل کے ٹینکر کو روکے جانے کے بعد کیا ہے جس پر برطانیہ کا پرچم تھا۔

      کل نائب ایرانی صدر اسحاق جہانگیری نے اپنے ملک کی طرف سے ایک برطانوی ٹینکر کو روکے جانے کے سلسلہ میں کہا کہ اہل برطانیہ نے طاقت کی زبان میں گفتگو کرنے کا ارادہ کیا لیکن ان کو یہ بھی معلوم ہے کہ ہمارے پاس بھی طاقت کی زبان ہے۔(۔۔۔)

بدھ 21 ذی قعدہ 1440 ہجری – 24 جولائی 2019ء – شمارہ نمبر [14848]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>