یمن کے وزیر اعظم: باغیوں سے کوئی گفتگو نہیں اور قربانیاں رنگ لائیں گی - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعرات, 1 اگست, 2019
0

یمن کے وزیر اعظم: باغیوں سے کوئی گفتگو نہیں اور قربانیاں رنگ لائیں گی

یمن کے وزیر اعظم معین عبد الملک کو دیکھا جا سکتا ہے

لندن: بدر القحطانی

     یمن کے وزیر اعظم ڈاکٹر معین عبد الملک نے کہا کہ حکومت اور جنوبی باغی کمیٹی کے ساتھ گفتگو نہیں ہو سکتی ہے لیکن انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ پرامن انداز میں سیاسی کام کو جاری رکھنے کے سلسلہ میں ان کی حکومت کو کوئی اعتراض نہیں ہے اور وہ جمہوری انداز میں سیاسی کام کے ماحول کو اچھا بنانے کے سلسلہ میں کوشش کرے گی۔

     الشرق الاوسط کے ساتھ ہونے والی گفتگو میں انہوں نے کہا کہ میں ان کرداروں کی تعریف کرتا ہوں جو کمیٹی کے چند افراد نے ادا کیا ہے اور حوثیوں کے باغی میلیشیاؤں کو سکشت دینے کے لئے جو کام قومی جنوبی طاقت کے رہنماؤں نے انجام دیا اسے بھولا نہیں جا سکتا ہے اور انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہمارا دروازہ تماما رہنماؤں کے لئے کھلا ہوا ہے اور اس بات کی اہمیت کو بھی جانتے ہیں کہ یمن کے اندر ایرانی منصوبہ کا مقابلہ کرنے کے لئے وہ ہماری صف میں ہیں اور قانون کا احترام کرتے ہوئے اور ملک کی سلامتی کا پاس ولحاظ رکھتے ہوئے ہم افہام وتفہیم کا کام کر سکتے ہیں۔(۔۔۔)

جمعرات 29 ذی قعدہ 1440 ہجری – 01 اگست 2019ء – شمارہ نمبر [14856]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>