عدن میں ایک خونریز دن اور قانونی حکومت کی طرف سے ایران پر الزام - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعہ, 2 اگست, 2019
0

عدن میں ایک خونریز دن اور قانونی حکومت کی طرف سے ایران پر الزام

عدن میں میزائل کے ذریعہ ہونے والے حملہ کے بعد فوج کو پریشانی کی حالت میں دیکھا جا سکتا ہے

عدن: علی ربیع

       کل یمن کی وقتی دار الحکومت عدن میں ہونے والے دو حملوں کے بعد خونریز دن کا مشاہدہ کیا گیا ہے اور ان دو حملوں میں بیلسٹک میزائیل اور ڈرون جہاز کے ذریعہ الجلاء نامی فوجی اڈہ کو ایک طرف نشابہ بنایا گیا ہے تو دوسری طرف شہر کے شمال میں واقع الشیخ عثمان کے علاقہ کے پولیس اسٹیشن کو کار دھماکہ کے ذریعہ نشانہ بنایا گیا ہے اور ان دو حملوں میں 49 افراد ہلاک اور دسیوں زخمی ہوئے ہیں اور یہ معلومات پہلی سرکاری اعداد وشمار کے مطابق ہیں۔

      فوجی اڈہ پر ہونے والے حملہ کی ذمہ داری حوثی میلیشیاؤں نے لی ہے اور اس حملہ میں 36 آفیسر اور فوج ہلاک ہوئے ہیں جن میں سرفہرست سیکیورٹی بیلٹ کے ممتاز رہنماء اور پہلے بریگیڈ سپورٹ اور انتساب کے کمانڈر بریگیڈیئر جنرل منیر الیافعی ہیں جبکہ متعینہ گروہ کی طرف سے پولیس اسٹیشن پر ہونے والے حملہ میں 13 افراد ہلاک ہوئے ہیں لیکن اس حملہ میں دہشت گرد جماعتوں کی علامتیں ملی ہیں۔

      یمنی حکومت کے صدر ڈاکٹر معین عبد الملک نے ایران پر جماعت اور تنظیم کے درمیان معاہدہ کرنے کا الزام عائد کیا ہے اور انہوں نے اپنے ٹویٹر پر لکھا کہ دار الحکومت عدن کی امن وسلامتی کو دہشت گرد جماعتوں اور حوثی باغیوں کے رہنماؤں کی طرف سے نشانہ بنایا جانا اس بات کی تصدیق ہے کہ واضح طور پر ایرانی انتظامیہ کے تحت یہ کام انجام دیا گیا ہے۔(۔۔۔)

جمعہ 01 ذی الحجہ 1440 ہجری – 02 اگست 2019ء – شمارہ نمبر [14857]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>