نتن یاہو کی طرف سے عراق کے اندر ایرانی پوائنٹس پر ہونے والے حملہ کا اعتراف - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: جمعہ, 23 اگست, 2019
0

نتن یاہو کی طرف سے عراق کے اندر ایرانی پوائنٹس پر ہونے والے حملہ کا اعتراف

گزشتہ ہفتہ حشد شعبی کے ایک ہیڈکواٹر کو نشانہ بنانے والے حملہ کے بعد بغداد کی ایک مسجد میں ہونے والی تباہی وبربادی کے منظر کو دیکھا جا سکتا ہے

تل ابیب: نظیر مجلی ۔ بغداد: حمزہ مصطفی

       چند ہفتے خاموشی کے بعد کل شام اسرائیلی وزیر اعظم نتن یاہو نے عراق کے اندر ایرانی فوجی ہیڈکواٹر پر ہونے والے حملہ کا اعتراف کیا ہے اور کہا ہے کہ انہوں نے ہی ایران کی دشمنی پر مبنی منصوبوں کو ناکام کرنے کے لئے فوج کو آزادی کے ساتھ پیش آنے کا حکم دیا ہے۔

     نٹنیاہو نے نائن نامی اسرائیلی چینل کے ساتھ ہونے والے انٹرویو میں کہا کہ اسرائیل ایران کو کسی بھی جگہ اپنے خلاف ہیڈکواٹر قائم کرنے کی حفاظت ہرگز نہیں دے گا خواہ وہ عراق میں ہو یا یمن میں ہو یا شام میں ہو یا پھر لبنان ہی میں کیوں نہ ہو۔

      اسی سلسلہ میں کل عراق کی تین رکنی صدارت نے پرزور انداز میں کہا کہ وہ حسابات کی صفائی اور محاور کی پالیسی کو مسترد کرتی ہے جبکہ حشد شعبی کے ہیڈکوارٹر پر ہونے والے حالیہ بم دھماکہ کے سلسلہ میں جدل وجدال ہو رہا ہے۔(۔۔۔)

جمعہ 22 ذی الحجہ 1440 ہجری – 23 اگست 2019ء – شمارہ نمبر [14878]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>