عراق کی طرف سے ایرانی مدد کے ذریعہ روسی میزائل نظام کا مطالبہ - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 8 ستمبر, 2019
0

عراق کی طرف سے ایرانی مدد کے ذریعہ روسی میزائل نظام کا مطالبہ

گذشتہ روز شامی اور ترکی کی سرحد پر واقع قصبہ طل ابیض کی فوجی کونسل کے ساتھ مشترکہ گشت میں امریکی میکنزم کو دیکھا جا سکتا ہے

لندن: ابراہیم حمیدی

        کل عرب ذرائع نے الشرق الاوسط کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عراقی قومی سلامتی کے مشیر اور پاپولر موبلائزیشن آرگنائزیشن کے سربراہ فالح فیاض نے ماسکو کے اپنے دورے کے دوران عراق کو میزائلوں کا ترقی یافتہ "ایس300” نظام اور اس سے بھی زیادہ ترقی یافتہ "ایس400” فروخت کرنے کا مطالبہ کیا ہے اور ان ذرا‏ئع نے اس بات کی طرف بھی اشارہ کیا ہے کہ تہران نے بغداد کو ایسا کرنے کی ترغیب بھی دی ہے۔

       عراقی حکومت نے اس سے قبل "ایس400”  حاصل کرنے کے سلسلہ میں کہا تھا کہ وہ اسے نہیں خریدنا چاہتی ہے اور اب یہ خیال کیا جا رہا ہے کہ عراق نے "ایس300” کے خریدنے کی درخواست کی ہے جسے ایرانی حمایت بھی حاصل ہے لیکن اس درخواست کے سلسلہ میں امریکی اعتراض کا سامنا ویسے کرنا ہوگا جیسے انقرہ کو "ایس400” کے خریدنے کے سلسلہ میں کرنا پڑا تھا۔

       حالیہ ہفتوں میں حشد کے پوائنٹس پر ہونے والے ان حملوں میں جن کے بارے میں یہ کہا جا رہا ہے کہ یہ اسرائیلی حملے ہیں ان میں ایرانی میزائل اور ہتھیار کے گودام متاثر ہوئے ہیں اور ذرائع نے ہس سلسلہ میں بتایا ہے کہ عراقی افواج پارلیمنٹ میں امریکی افواج کو نکالنے کے لئے کام کر رہی ہیں جبکہ واشنگٹن نے ان حملوں میں اپنے تعلقات کے ہونے کا انکار کیا ہے۔(۔۔۔)

اتوار 09 محرم الحرام 1441 ہجری – 08 ستمبر 2019ء – شمارہ نمبر [14894]

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>