لبنان کے مظاہرے ہوئے وسیع ... حکومت استعفی دینے سے بچنے کے لئے "چوکس" نگرانی کے نکات منگل کو ہوئے مکمل ... اقوام متحدہ فیلڈ نزول کو تیز کرنے کا خواہاں - الشرق الاوسط اردوالشرق الاوسط اردو
الشرق اردو
به قلم:
کو: اتوار, 20 اکتوبر, 2019
0

لبنان کے مظاہرے ہوئے وسیع … حکومت استعفی دینے سے بچنے کے لئے "چوکس” نگرانی کے نکات منگل کو ہوئے مکمل … اقوام متحدہ فیلڈ نزول کو تیز کرنے کا خواہاں

گذشتہ روز وسط بیروت کے علاقہ ریاض صلح اسکوائر میں ایک زبردست مظاہرہ دیکھا جاسکتا ہے ( روئٹرز)

بیروت: الشرق الاوسط

شدید عوامی احتجاج نے بگڑتی ہوئی معاشی صورتحال کے پس منظر کے خلاف لبنانی عہدیداروں سے استعفیٰ کا مطالبہ تیز کردیا ہے ، بگڑتی ہوئی صورتحال سے نمٹنے کے لئے بنائے گئے منصوبہ میں حکومتی وعدوں کے باوجود جس میں نئے ٹیکس شامل نہیں ہیں ، اور صدر جمہوریہ عماد میشال عون کی طرف سے کابینہ کے اجلاس کے بعد گزشتہ جمعرات کو شروع ہونے والے بحران کے لئے قریبی اور اطمینان بخش حل کی تصدیق کے باوجود ، عوام کو تردد ہے حکومت بڑھتے ہوئے مالی خسارے سے نمٹنے کے لئے نئے ٹیکس کو عائد کرنے پر غور کررہی ہے ۔ جبکہ بڑی سڑکوں پر توجہ مرکوز کرنے کی وجہ سے ڈاکوؤں کی کارروائیوں میں کمی آئی ہے ، بیروت کے شمال میں واقع ذوق کے علاقے،طرابلس ، اور وسط بیروت میں جمع ہونے والے مظاہرین کی بھیڑ میں اضافہ ہوا ہے ، اسی طرح شہر صور اور نبطیہ میں بھی بھیڑ میں اضافہ ہوا ہے جہاں پارلیمنٹ کے صدر نبیہ بری کے زیرِ صدارت امل تحریک کے افراد اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں دیکھنے کو ملیں ۔ اس تحریک کے ساتھ ساتھ، حکومت کی نگرانی قابل توجہ تھی کہ ایسے حل تلاش کرنے کی کوشش کی جائے جو مظاہرین کو مطمئن کریں اور عوامی مالی وسائل کو تحفظ فراہم کرسکیں۔ (…)(اتوار  21  صفر 1441 ہجرى/ 20  اکتوبر 2019ء شماره نمبر 14913)

الشرق اردو

الشرق اردو

«الشرق الاوسط» چار براعظموں کے 12 شہروں میں بیک وقت شائع ہونے والا دنیا کا نمایاں ترین روزنامہ عربی اخبار ہے، 1978ء میں لندن كي سرزميں پر میں شروع ہونے والا الشرق الاوسط آج عرب اور بین الاقوامی امور ميں نمایاں مقام حاصل كر چکا ہے جو اپنے پڑھنے والوں کے لئے تفصیلی تجزیے اور اداریے کے ساتھ ساتھ پوری عرب دنیا کی جامع ترین معلومات پیش کرتا ہے- «الشرق الاوسط» دنیا کے کئی بڑے شہروں میں بیک وقت سیٹلائٹ کے ذریعہ منتقل ہونے والا عربی زبان کا پہلا روزنامہ اخبار ہے، جیسا کہ اس وقت یہ واحد اخبار ہے جسے عظیم الشان بین الاقوامی اداروں کے لئے عربی زبان میں شائع ہونے کے حقوق حاصل ہیں جہاں سے «واشنگٹن پوسٹ»،

More Posts - Website - Twitter - Facebook

شيئر

تبصرہ کریں

XHTML/HTML <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong>