فلسطینی حکومت فروری کے ماہ میں انتخابات کرانے کا منصوبہ بنا رہی ہے

فلسطینی حکومت فروری کے ماہ میں انتخابات کرانے کا منصوبہ بنا رہی ہے

اتوار, 3 November, 2019 - 09:15
         فلسطین کی مرکزی الیکشن کمیشن کے ایک ذمہ دار نے اس بات کی امید ظاہر کی ہے کہ اگر انتخابات کے سلسلہ میں کوئی رکاوٹ پیش نہ آئے گی تو فروری کے ماہ میں فلسطینی علاقوں کے اندر قانون ساز انتخابات کرائے جائیں گے۔
         الیکشن کمیشن کے ایکزیکٹیو ڈائریکٹر ہشام کحیل نے فلسطین کی سرکاری ریڈیو پر واضح کیا کہ قانون ساز انتخابات کرائے جانے کے سلسلہ میں صدارتی فرمان جاری ہونے کی حالت میں اس بات کی توقع ہے کہ انتخابات فروری کے ماہ میں ہوں گے اور پھر اس کے بعد صدارتی انتخابات ہوں گے۔
       کحیل نے اس بات کا بھی ذکر کیا کہ الیکشن کمیشن کا وفد آج دوبارہ تحریک حماس اور دیگر جماعتوں کو صدر محمود عباس کے فیصلہ سے باخبر کرنے کے لئے غزہ پٹی کا رخ کرے گا تاکہ اس انتخابات کی دعوت کو آگے بڑھایا جا سکے اور رکاوٹ پیدا ہونے کی صورت میں اس کا حل تلاش کیا جا سکے اور انہوں نے یہ بھی کہا کہ یہ وفد اسی دن واپس بھی ہوگا تاکہ غزہ میں ان جماعتوں کے ساتھ ہونے والے اجلاس کے نتائج کو صدر عباس کے سامنے پیش کر سکے۔
        یہ بات طے شدہ ہے کہ صدر عباس ایک ایسا فرمان جاری کریں گے جس میں وہ قانون ساز انتخابات کرانے کی دعوت دیں گے اور اس انتخاب کے چند ماہ بعد صدارتی انتخابات ہوں گے۔(۔۔۔)

Related News



انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا