لبنان: صدارتی محل کے پاس لوگوں کا ہجوم اور میدانوں میں لوگوں کا تانتہ

لبنان: صدارتی محل کے پاس لوگوں کا ہجوم اور میدانوں میں لوگوں کا تانتہ

پارلیمانی مشاورت کی تاخیر کے سلسلہ میں آئینی بحث ومباحثہ
پیر, 4 November, 2019 - 11:30
گذشتہ شام بیروت میں بدعنوانی اور فرقہ وارانہ نظام کے خلاف زبردست مظاہرہ کے ساتھ ساتھ عبدہ محل کے سامنے عون کے حامیوں کو ان کی نوجوانی کی تصویر اٹھائے دیکھا جا سکتا ہے

       مکمل یکجہتی کے عنوان کے تحت لبنانی عوام کی زبردست ہجوم نے جن مقاصد کے لئے انقلاب کا آغاز ہوا ہے انہیں پورا کرنے کے ارادہ سے عوامی دباؤ کو مسلسل جاری رکھنے کے مقصد سے کل مختلف علاقہ میں مظاہرہ کرنے کے لئے دی جانے والی دعوت پر لبیک کہا ہے اور یاد رہے کہ ان مقاصد میں سرفہرست بدعنوانی کا خاتمہ ہے اور فرقہ وارانہ انتظامیہ کی تبدیلی ہے جبکہ آزاد قومی تحریک نے صدر جمہوریہ مائکل عون کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے ان کے انتخاب کی تیسری برسی کے موقع پر اپنے عبدہ محل کی سڑک پر ایک مارچ کا انعقاد کیا ہے۔
       صدر عون نے اپنے ساتھ اظہار یکجہتی کرنے والوں کے لئے ہونے والے خطاب میں بدعنوانی کا مقابلہ کرنے، معاشی ترقی اور سول حکومت کے قیام کا مطالبہ کیا ہے جبکہ وزیر برائے امور خارجہ اور آزاد قومی تحریک کے سربراہ جبران باسیل نے ذمہ داروں کے اکاؤنٹس کے الٹ پھیر کے انکشاف کئے جانے کا مطالبہ کیا ہے اور یہ بھی کہا ہے کہ انقلاب فاسد لوگوں کی بقا کے ساتھ ختم نہیں ہونا چاہئے اور انہوں نے مزید کہا کہ یہ انصاف نہیں ہوگا کہ ہم پر دو بار ظلم کیا جائے ایک بار بدعنوانی کی علامت کے ذریعہ اور دوسری بار اس کے شکاروں کے ذریعہ۔
        یہ سب ایسے وقت میں ہو رہا ہے جب وزیر اعظم سعد حریری کے استعفیٰ کے پانچ دن بعد انہیں حکومت کا ذمہ دار بنائے جانے کے سلسلہ میں صدر عون کی پارلیمانی مشاورتی اجلاس کی ملتوی ہونے کی آئینی حیثیت پر سیاسی اور قانونی بحث ومباحثہ ہو رہا ہے۔(۔۔۔)


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا