ایندھن کی قیمتوں میں اچانک اضافہ کے بعد ایران میں غصہ کی لہر

ایندھن کی قیمتوں میں اچانک اضافہ کے بعد ایران میں غصہ کی لہر

کئی شہروں میں احتجاج، پولس کی گولیوں سے افراد ہلاک اور پٹرول پمپ کے سامنے لمبی لمبی لائنیں
ہفتہ, 16 November, 2019 - 15:30
عبادان شہر میں مظاہروں کے ایک منظر کو دیکھا جا سکتا ہے
        ایندھن کی قیمتوں میں اچانک 50 فیصد سے زیادہ اضافے اور بغیر کسی انتباہ کے کوٹے کے نفاذ کے بعد ایرانی حکام نے بدھ کے روز اپنے شہریوں میں غم وغصہ کی لہر کو عام کر دیا ہے۔
       پولس نے تہران، شیراز، محمرہ، مشہد، عبادان ، شیبان اور سیرجان سمیت متعدد شہروں میں مظاہرین پر گولی چلائی ہے جس کے نتیجہ میں پولس کی گولی سے ایک فرد ہلاک ہوا ہے اور ایسو شی ایٹ پریس نے بتایا ہے کہ جمعرات وجمعہ کو اعلان کردہ اضافے کے بعد تہران کے پٹرول پمپوں کے سامنے گاڑیوں کو گھنٹوں انتظار کرتے ہوئۓ دیکھا گیا ہے۔(۔۔۔)
ہفتہ 19 ربیع الاول 1441 ہجرى - 16 نومبر 2019ء شماره نمبر [14963]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا