سیستانی کے ذریعہ عراق میں سلیمانی کے ایک امیدوار کا گھیراؤ

سیستانی کے ذریعہ عراق میں سلیمانی کے ایک امیدوار کا گھیراؤ

ہفتہ, 21 December, 2019 - 12:30
گزشتہ روز نجف میں ایک مظاہرہ کے دوران مظاہرین میں سے ہلاک شدگان کے علامتی تابوت کو لے جاتے ہوئے عراقی لوگوں کو دیکھا جا سکتا ہے (اے پی اے)
         جب استعفی دینے والے "دعو" پارٹی کے رہنما قصي السهيل کو قدس فورس کے رہنما قاسم سلیمانی کی حمایت سے عادل عبد المہدی کے جانشیں کے طور پر عراقی حکومت کی سربراہی کی ذمہ داری کی حصولیابی کی کامیابی ملی تو اس وقت نجف میں شیعہ اتھارٹی کا موقف سامنے آیا اور ان کی کوشش سلیمان کی کاوش کو ناکام بنا کر السهيل کا گھیراؤ کرنا ہے۔
         شیعہ کے ایک بڑے عالم دین  ​​علی السیستانی کے نمائندہ شیخ عبد المهدي كربلائي نے کربلا میں جمعہ کے خطبہ کے دوران کہا کہ عوام ہی اختیارات کے سرچشمہ ہیں اور ان ہی سے قوت حاصل کی جاتی ہے اور آئین میں بھی اسی کا ذکر ہے۔
         انہوں نے مزید کہا ہے کہ اس وقت موجودہ بحران سے نکلنے اور نامعلوم یا افراتفری کی طرف حکومت کو لے جانے سے بچنے یا اندرونی لڑائی میں داخل ہونے سے بچنے کا سب سے قریب ترین اور محفوظ ترین راستہ لوگوں کے ذریعہ جلد انتخابات کرانا ہے اور انہوں نے اس بات کا بھی مطالبہ کیا کہ  اس نئی حکومت کی تشکیل دینے کے لئے زیادہ طویل عرصے تک انتظار نہیں کرنا چاہئے اور حکومت کا غیر متنازعہ ہونا بھی ضروری ہے۔(۔۔۔)
ہفتہ 24 ربیع الآخر 1441 ہجرى - 21 دسمبر 2019ء شماره نمبر [14998]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا