عرب اور بین الاقوامی سطح پر لیبیا میں اردوگان کی مداخلت کا انکار

عرب اور بین الاقوامی سطح پر لیبیا میں اردوگان کی مداخلت کا انکار

جمعہ, 27 December, 2019 - 12:45
ترک صدر رجب طیب اردگان کو گذشتہ روز انقرہ میں پارلیمنٹ سے خطاب کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے
          گذشتہ روز ترک صدر رجب طیب اردگان کی طرف سے لیبیا فوج بھیجنے کے سلسلہ میں ان کی منظوری کے اعلان کا انکار عرب اور بین الاقوامی سطح پر ہوا ہے جبکہ تونس کی صدارت نے اس اتحاد سے علیحدگی اختیار کرلی ہے جسے اردگان لیبیا میں اپنی فوجی مداخلت کی حمایت کے لئے تشکیل دینے کی کوشش کر رہے ہیں۔
          مصری صدر عبد الفتاح السیسی نے اپنے امریکی ہم منصب ڈونلڈ ٹرمپ اور اٹلی کے وزیر اعظم جوسیپی کونٹے کے ساتھ ٹیلیفون پر ہونے والی بات چیت میں پرزور انداز میں کہا ہے کہ لیبیا کے مسئلہ میں غیر قانونی بیرونی مداخلت کو ختم کرنے کی ضرورت ہے اور کونٹے نے لیبیا فائل میں مداخلت کی مذمت کی ہے جبکہ کرملین نے کہا ہے کہ صدر ولادیمیر پوٹن نے لیبیا میں انقرہ کی مداخلت کے سلسلہ میں اپنی تشویش کا اظہار کیا ہے۔
          سیسی نے ٹرمپ کے ساتھ ہونے والی گفتگو کے دوران اس بات پر زور دیا ہے کہ فیلڈ مارشل خلیفہ حفتر کی سربراہی میں قومی فوج دہشت گردی کا مقابلہ کرنے اور مسلح میلیشیاؤں کی سرگرمیوں کو کم کرنے میں اہم کردار ادا کر رہی ہے۔(۔۔۔)
جمعہ 01 جمادی الاول 1441 ہجرى - 27 دسمبر 2019ء شماره نمبر [15004]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا