روس کی وجہ سے شام کے دو تہائی حصے شامی انتظامیہ کو واپس

روس کی وجہ سے شام کے دو تہائی حصے شامی انتظامیہ کو واپس

دو ہفتوں کے اندر ادلب کے 11 طبی مراکز تباہ
بدھ, 1 January, 2020 - 16:30
گذشتہ اکتوبر کے مہینہ کے دوران شام ترک سرحد کے قریب روسی گشت کو دیکھا جا سکتا ہے (اے پی پی)
        روس نے سنہ 2019 میں شام کے اندر اپنے فوائد کو مستحکم کرنے کے لئے دوسری پارٹیوں کے ساتھ فوجی طاقت اور افہام وتفہیم کا طریقہ استعمال کیا ہے اور اسی بنیاد پر اس نے شام کے تقریبا دو تہائی علاقے کو شامی حکومت میں واپس لوٹا دیا ہے اور اس نے ملک کے 185 مربع کلومیٹر تک پھیلی ہوئی مسافت میں سے 72 فیصد سے زائد رقبے پر شامی حکومت کی دسترس قائم کرا دی ہے جبکہ سنہ 2015 میں اس کی دسترس 10 فیصد پر تھی۔ .
      گذشتہ روز انسانی حقوق کی شامی رصدگاہ نے اطلاع دی ہے کہ اس نے روسی فوجی کی مداخلت کے 51ویں مہینے میں 20 بچوں سمیت 67 شہریوں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے اور اسی طرح ساحل کے پہاڑوں اور ادلب کے دیہی علاقوں پر ہونے والے روسی فضائی حملوں کے نتیجے میں لڑنے والے دھڑوں کے 40 ارکان کی ہلاکت کی بھی تصدیق ہوئی ہے۔(۔۔۔)
بدھ 06 جمادی الاول 1441 ہجرى - 01 جنوری 2020ء شماره نمبر [15009]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا