سوڈانی انٹیلی جنس کی فورسز کی بغاوت اور قوش پر الزام

سوڈانی انٹیلی جنس کی فورسز کی بغاوت اور قوش پر الزام

بدھ, 15 January, 2020 - 12:00
گذشتہ روز خرطوم میں سڑکیں جام کرنے والے حکومت سے وابستہ ریپڈ مداخلت فورس کے ارکان کو دیکھا جا سکتا ہے
         گذشتہ روز سوڈانی دار الحکومت خرطوم میں اس ملٹری آپریشن اتھارٹی کی سیکیورٹی فورسز کی یونٹس کے درمیان بڑے پیمانے پر بغاوت دیکھنے میں آیا ہے جو الگ تھلگ حکومت کے دوران سیکیورٹی اور انٹلیجنس ادارہ پر ضرب لگانے والی طاقت کی نمائندگی کر رہی تھی۔
        حکومت نے پیش آنے والے واقعات کو بغاوت کے طور پر سمجھا ہے اور اس نے ان فورسز کو ہتھیار ڈال کر اپنے آپ کو حوالہ کرنے کا مطالبہ کیا ہے لیکن خودمختار کونسل کے نائب سربراہ محمد حمدان دقلو (حمیدتی) نے ملک سے باہر رہنے والے سابق انٹلیجنس چیف صلاح قوش پر ان واقعات کی منصوبہ بندی کرنے کا الزام عائد کیا ہے اور انہوں نے اسے بغاوت کی کوشش سے تعبیر کیا ہے اور اسی کے ساتھ انہوں نے انٹرپول سے انہیں گرفتار کرنے کا مطالبہ بھی کیا ہے اور اس کے بعد انہوں نے ان درجنوں باغی قوتوں کے خلاف ہونے والی کارروائیوں کے دوران بھاری ہتھیاروں کے پکڑے جانے کی طرف اشارہ کیا ہے۔(۔۔۔)
بدھ 20 جمادی الاول 1441 ہجرى - 15 جنوری 2020ء شماره نمبر [15023]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا