امریکہ میں ایران کی کشیدگی کے بعد عراق کے اندر "پیٹریاٹ" پھیلانے کے سلسلہ میں غور وفکر

امریکہ میں ایران کی کشیدگی کے بعد عراق کے اندر "پیٹریاٹ" پھیلانے کے سلسلہ میں غور وفکر

جمعہ, 31 January, 2020 - 12:00
امریکی وزیر دفاع مارک ایسبر کو دیکھا جا سکتا ہے
        امریکی وزیر دفاع مارک ایسبر نے گذشتہ روز کہا ہے کہ ان کا ملک ایران کی کشیدگی اور 8 جنوری کو دو فوجی اڈوں پر ہونے والے اس حملہ کے بعد جس میں 50 امریکی فورسز ہلاک ہوئے تھے امریکہ نے اپنے افواج کی دفاع کرنے کے لئے پیٹریاٹ میزائل نظام کو ملک کے اندر داخل کروانے کے لئے عراقی منظوری حاصل کرنے کا خواہاں ہے۔
         دوسری طرف کل عراقی فوج نے کہا ہے کہ اس نے داعش کے خلاف ہونے والی جنگ کے لئے امریکہ کی زیر قیادت اتحاد کے ساتھ تعاون کے ذریعہ اپنی کاروائیوں کو دوبارہ شروع کردیا ہے جبکہ یہ کاروائیاں ایرانی فوجی کمانڈر قاسم سلیمانی کی ہلاکت اور اس کے بعد عراق میں امریکی افواج کی میزبانی کرنے والے دو ٹھکانوں پر ایرانی حملوں کے بعد رک گئ تھیں۔(۔۔۔)
جمعہ 06 جمادی الآخر 1441 ہجرى - 31 جنوری 2020ء شماره نمبر [15039]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا