یمن کی طرف سے فنڈز کی چوری کی بین الاقوامی تحقیقات کرنے کا مطالبہ

یمن کی طرف سے فنڈز کی چوری کی بین الاقوامی تحقیقات کرنے کا مطالبہ

جمعرات, 13 February, 2020 - 13:15
صنعا میں ورلڈ فوڈ پروگرام سے امداد حاصل کرنے کے لئے یمنی شہریوں کو تیار صف میں دیکھا جا سکتا ہے (اے پی اے)
        یمنی حکومت نے بین الاقوامی سلامتی کونسل کے تابع اقوام متحدہ کے ماہرین پر مشتمل ٹیم سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ بغاوت کے سالوں کے دوران حوثیوں کے ذریعہ لوٹے جانے والے بڑے فنڈز کے سلسلہ میں تحقیقات کریں۔
        یمن کے وزیر اطلاعات معمر الاریانی نے پریس بیانات میں حوثی میلیشیاؤں پر سخت کرنسی کے نقد ذخائر اور سرکاری خزانے میں سے سیکڑوں اربوں کی لوٹ مار کرنے کا الزام عائد کیا ہے اور ان ہی میں 400 ارب ریال بھی شامل ہے جو ابھی ابھی پہنچا تھا اور وہ صنعا میں سنٹرل بینک کے پاس تھا اور الاریانی نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ پوری یمنی سرزمین پر ریاست کے اختیارات میں توسیع کرنے کے لئے قانونی حکومت کی حمایت کریں۔
       اسی سلسلہ میں اقوام متحدہ میں یمن کے مستقل نمائندہ عبد اللہ السعدی نے پرسو ایگزیکٹو کونسل کے پہلے اجلاس کے سامنے کی جانے والی اپنی ایک تقریر میں یونیسیف سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ میلیشیاؤں کے ذریعہ بھرتی ہونے کے بعد 30 ہزار بچوں کو حوثی چھیڑ چھاڑ سے بچائیں کیونکہ انہیں موت کے خطرہ کا سامنا ہے اور ان کے حقوق بھی پامال ہو رہے ہیں۔(۔۔۔)
جمعرات 19 جمادی الآخر 1441 ہجرى - 13 فروری 2020ء شماره نمبر [15052]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا