ترکی کی طرف سے ادلب میں اس کی فورسز کو ملی تقویت اور روس کی اشتعال انگیزی سے گریز

ترکی کی طرف سے ادلب میں اس کی فورسز کو ملی تقویت اور روس کی اشتعال انگیزی سے گریز

منگل, 18 February, 2020 - 09:30
حلب کے مغرب میں واقع دارة عزة نامی علاقہ کے ایک اسپتال میں ہونے والے حملہ کے بعد متاثرین کو تلاش کرتے ہوئے ایک شخص کو دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
ایسے وقت میں جب کل ​​ماسکو اور انقرہ کے درمیان ادلب کی صورتحال کے سلسلہ میں نظریات کے قریب ہوتے ہوئے مواقع کے بارے میں متعدد اشارے سامنے آئے ہیں اور ترکی کی طرف سے وسیع پیمانہ پر فوجی آپریشن کرنے کی مسلسل دھمکیوں کے سلسلہ میں روسی رد عمل کا اظہار ہوا ہے لیکن ان سب کے باوجود ترکی نے کشیدگی نہ ہونے والے زون کے اندر اپنے نئے فوجی مشاہدے کے مقامات پر اپنی تعیناتی کو مزید تقویت بخشی ہے اور شام کی سرحد پر مزید فوجی کمک بھی فراہم کی گئی ہے۔
اسی وقت انقرہ نے ماسکو کی اشتعال انگیزی سے بچنے کی کوشش بھی کی ہےکیونکہ اس نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ وہ شام کے بحران پر اس کے ساتھ ہم آہنگی جاری رکھے گا اور یہ بھی ضروری ہے کہ اس بحران کی وجہ سے دونوں ممالک کے درمیان باہمی تعاون کے تعلقات متاثر نہیں ہوں گے اور اسی کے ساتھ ماسکو میں بند دروازوں کے پیچھے طویل مذاکرات ہوئے ہیں اور اس مذاکرات میں روس اور ترکی کے فوجی اور سفارتی اہلکار شامل ہوئے تھے۔(۔۔۔)
منگل 24 جمادی الآخر 1441 ہجرى - 18 فروری 2020ء شماره نمبر [15057]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا