فوج کی طرف سے طرابلس کی بندرگاہ میں رکھے ہوئے ہتھیاروں کو نشانہ بنانے کا اعلان

فوج کی طرف سے طرابلس کی بندرگاہ میں رکھے ہوئے ہتھیاروں کو نشانہ بنانے کا اعلان

بدھ, 19 February, 2020 - 12:30
فیلڈ مارشل خلیفہ حفتر کی سربراہی میں لیبیا کی نیشنل آرمی نے گزشتہ روز اعلان کیا ہےکہ اس نے طرابلس پورٹ میں رکھے ہوئے ہتھیاروں کو نشانہ بنایا ہے اور "نیشنل آرمی" کے ذریعہ کیے گئے "وقار آپریشن" کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ لیبیا کی مسلح افواج کے جنرل کمانڈ ان تمام اقدامات کا خیر مقدم کرتے ہیں جن کا مقصد ملک میں امن قائم کرنا ہے ... لیکن فائز السراج اور ان کے گروہوں سے نکلے ہوئے دہشت گرد جماعتوں کی طرف سے بار بار ہونے والی خلاف ورزیوں اور فائرنگ کے تبادلے کے پیش نظر مسلح افواج نے اپنے احکامات دیئے ہیں تاکہ طرابلس کی بندرگاہ کے اندر اسلحہ اور گولہ بارود کو ہلاک کر دیا جائے اور اس کا مقصد یہ ہے کہ شام سے پہنچنے والے ان فوجیوں کی جنگی صلاحیتں کمزور ہو جائیں جن کا مقصد (آئی ایس آئی ایس) اور (القاعدہ) جیسے شدت پسند جماعت سے منسلک مسلح گروپوں کے ممبروں کی مدد کرنی ہے۔
دریں اثنا آج اور کل طے شدہ "قومی قبائلی فورم" میں شرکت کرنے کے لئے لیبیا کے شیخ اور قابل ذکر افراد کی ایک بڑی تعداد دار الحکومت طرابلس سے 88 کلومیٹر کی دوری پر واقع ترہونہ کے شہر پہنچ چکے ہیں اور اس فورم کی دعوت قبیلے کے مشائخ اور ان کے کونسل کی طرف سے دئے گئے ہیں تاکہ متعدد نکات کے سلسلہ میں مشوریں ہو سکیں اور ان میں سب سے نمایاں دہشت گردی اور مسلح ملیشیاؤں کا مقابلہ کرنے میں "نیشنل آرمی" کی مسلسل حمایت کرنا ہے۔(۔۔۔)
بدھ 25 جمادی الآخر 1441 ہجرى - 19 فروری 2020ء شماره نمبر [15058]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا