لیبیا میں دوبارہ انسانی معاہدہ کا ہوا خاتمہ

لیبیا میں دوبارہ انسانی معاہدہ کا ہوا خاتمہ

منگل, 24 March, 2020 - 14:30
کورونا کے پھیلاؤ سے بچنے کے لئے کرفیو کے اقدامات کو نافذ کئے جانے کے دوران طرابلس کے مشرق میں واقع مصراتہ کے اندر پولیس افسران کو نگرانی کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (رائٹرز)
دوسرے دن بھی لیبیا میں تنازعہ کے فریقین فیلڈ مارشل خلیفہ حفتر کی سربراہی میں قومی فوج اور فاز السراج کی سربراہی میں وفاقی حکومت نے گزشتہ روز ایک دوسرے پر اس معاہدہ کی خلاف ورزی کے الزامات لگائے ہیں جو انھوں نے آپس میں کیا تھا جبکہ دار الحکومت طرابلس کے متعدد حصوں میں توپوں اور دھماکوں کی آواز واضح طور پر ابھی تک سنائی دے رہی ہے۔
نیشنل آرمی کے سرکاری ترجمان میجر جنرل احمد المسماری نے گزشتہ روز دہشت گرد ملیشیاؤں پر دوسرے دن ہی انسانیت پسندانہ معاہدہ کی خلاف ورزی کا الزام لگایا ہے کیونکہ ان لوگوں نے ترہونہ شہر کے شمال میں واقع شرشارہ کے علاقے کو ٹڈی راکٹوں کے ذریعہ نشانہ بنایا ہے جبکہ ان میلیشیاؤں نے اس شہر اور پورے علاقہ کے خلاف مزید کاروائیاں کرنے کی دھمکی دی ہے۔
المسماری نے نشاندہی کی ہے کہ دار الحکومت کے مشرق میں قصر بن غشیر اور وادی الربیع کے مضافاتی علاقوں میں توپ خانوں سے اندھا دھند گولے برسائے گئے ہیں۔(۔۔۔)
منگل 29 رجب المرجب 1441 ہجرى - 24 مارچ 2020ء شماره نمبر [15092]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا