مشرق وسطی میں کورونا پر قابو پانے کی کوشش اور یورپ میں پابندیاں کم کرنے کا آغاز

مشرق وسطی میں کورونا پر قابو پانے کی کوشش اور یورپ میں پابندیاں کم کرنے کا آغاز

بدھ, 8 April, 2020 - 11:15
ایک پاکستانی سفارتکار کو کل لندن میں برطانوی حکومت کے صدر دفاتر میں پھولوں کا گلدستہ لے جاتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (اے پی اے) - فریم میں فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون کو پیرس کے قریب میڈیکل سنٹر کے دورہ کے دوران ماسک پہنے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (اے ایف پی)
عالمی ادارۂ صحت نے کل اعلان کیا ہے کہ مشرق وسطی میں کورونا وائرس پر قابو پانے کے لئے ابھی بھی ایک موقع موجود ہے جبکہ یوروپی کمیشن پابندیوں کو آہستہ آہستہ کم کرنے کے مقصد سے حکمت عملی تیار کرنے کے لئے آگے بڑھ رہی ہے۔
ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے ریجنل آفس میں ایمرجنسیز کے ڈائریکٹر رچرڈ برینن نے کہا ہے کہ مشرق وسطی کے بیشتر ممالک میں ایچ آئی وی کے نئے معاملات میں روزانہ خطرناک اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے لیکن خطے میں اب بھی اس کے پھیلاؤ پر قابو پانے کا ایک موقع موجود ہے اور انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں صحت عامہ کے اقدامات کو مستحکم کرنے کے طریق کار کے لئے واقعی ایک جامع نقطۂ نظر کی ضرورت ہے جو موثر ثابت ہو سکے جیسے کہ ابتدائی نگرانی، ابتدائی معائنہ اور زخمیوں کو الگ تھلگ رکھنا۔(۔۔۔)
بدھ 15 شعبان المعظم 1441 ہجرى - 08 اپریل 2020ء شماره نمبر [15107]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا