سرکاری طور پر قطر اور روس ورلڈ کپ میں رشوت لینے کے ملزم ہیں

سرکاری طور پر قطر اور روس ورلڈ کپ میں رشوت لینے کے ملزم ہیں

بدھ, 8 April, 2020 - 12:00
فیفا کے سابق صدر بلیٹر کو گوئٹے مالا سالگوئرو کو اعزاز سے سرفراز کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے جبکہ دونوں پر رشوت کا الزام عائد کیا گیا ہے (اے ایف پی)
بروکلین میں فیڈرل پبلک پراسیکیوشن نے بین الاقوامی فٹ بال ایسوسی ایشن (فیفا) کے سابق دو عہدیداروں پر 2018 اور 2022 ورلڈ کپ کی میزبانی کے دوڑ میں روس اور قطر کو ووٹ دینے کے لئے رشوت لینے کا الزام عائد کیا ہے اور یہ ایک غیر معمولی بات ہے کیوںکہ یہ پہلا موقع ہے جب سرکاری عدالتی حکام نے ان دونوں واقعات سے متعلق بدعنوانی کے الزامات جاری کیے ہیں۔
پرسو روز ہی بروکلین میں پراسیکیوٹر جان ڈونوہیو کے ذریعہ کھلے عام فرد جرم میں زيوريخ کے اندر سنہ 2010 میں ہونے والے ووٹ سے متعلق بدعنوانی کی تفصیلات کے بارے میں تبادلۂ خیال کیا گیا ہے جس میں روس اور قطر کو ورلڈ کپ کی میزبانی فراہم کی گئی ہے۔(۔۔۔)
بدھ 15 شعبان المعظم 1441 ہجرى - 08 اپریل 2020ء شماره نمبر [15107]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا