تیونس میں ایک سماجی دھماکے کا خدشہ

تیونس میں ایک سماجی دھماکے کا خدشہ

ہفتہ, 11 April, 2020 - 12:15
سنہ 2013 کے آخر میں تیونس میں ہونے والے سیاسی گفت وشنید کے کفیل اور امن نوبل کے انعام یافتہ افراد کو ایک ساتھ دیکھا جا سکتا ہے
سنہ 2013 کے آخر میں تیونس میں ہونے والے سیاسی گفت وشنید کے کفیل اور امن نوبل کے انعام یافتہ نے غصے اور بھیڑ کی بڑھتی ہوئی سطح کی وجہ سے اس پرخطر سماجی دھماکے سے آگاہ کیا ہے جو گزشتہ وقت میں مضبوطی سے بڑھا ہے اور کچھ غریب لوگوں کے علاقوں میں احتجاج بھی ہوئے ہیں۔
سنہ 2013 کے سیاسی تعطل سے تیونس کو نکالنےکے لئے موثر شراکت کی بدولت نوبل انعام حاصل کرنے والے حسین العباسی، محمد الفاضل محفوظ، عبد الستار بن موسى اور وداد بوشماوي پر مشتمل اس چار رکنی ٹیم نے حکومت کی طرف سے 19 اپریل کو متعینہ مدت کے بعد بھی کرفیو کو جاری رکھنے کے احتمال اور اس کے منفی معاشرتی نقصانات سے اپنے خدشے کا اظہار کیا ہے لیکن یہ خدشات اس وقت ہوں گے جب ضرورت مند اور پسماندہ لوگوں کو فائدہ پہنچانے کے لئے کوئی اقدامات نہیں کئے جائیں گے۔(۔۔۔)
ہفتہ 18 شعبان المعظم 1441 ہجرى - 11 اپریل 2020ء شماره نمبر [15110]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا