طبی عملہ کی طرف سے مدد کی اپیل اور ستمبر میں ویکسین کی تیاری کی امید

طبی عملہ کی طرف سے مدد کی اپیل اور ستمبر میں ویکسین کی تیاری کی امید

اتوار, 12 April, 2020 - 12:30
پرسو پیرس کے قریبی اسپتال میں نائٹ شفٹ کے دوران انتہائی نگہداشت والے محکمہ میں تھکی ماندی نرس کو دیکھا جا سکتا ہے (ای پی اے)
دنیا کی میڈیکل ٹیمیں اگلی صفوں میں کورونا کی وبا کا مقابلہ کررہی ہیں جن میں اکثر کے پاس بنیادی حفاظتی ساز وسامان نہیں ہے اور دنیا کے مختلف ممالک میں ڈاکٹروں، نرسوں اور صحت کے تکنیکی ماہرین نے مدد کا مطالبہ کیا ہے اور اپنی حکومتوں سے ماسک، دستانے اور سوٹ جیسے حفاظتی کٹس فراہم کرنے کو کہا ہے اور گزشتہ روز اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انٹونیو گوٹیرس نے اس وبا سے لڑنے والے ڈاکٹروں اور نرسوں کی کوششوں کو تسلیم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔
جہاں دنیا بھر میں اموات کی تعداد ایک لاکھ سے تجاوز کر گئی ہیں وہیں برطانیہ کی "آکسفورڈ" یونیورسٹی میں ویکسین کی پروفیسر سارہ گلبرٹ نے بتایا ہے کہ اگلے ستمبر تک ایک ویکسین دستیاب ہو سکے گی اور گلبرٹ نے تصدیق کی ہے کہ برٹش یونیورسٹی میں ایک ٹیم اس ویکسین کی فراہمی کے لئے کام کر رہی ہے اور انہوں نے اس بات کی طرف بھی اشارہ کیا کہ انھیں یقین ہے کہ اس وقت یہ 80 فیصد دستیاب ہو چکی ہے اور گلبرٹ نے ٹائمز کو دیئے گئے ایک بیان میں کہا ہے کہ کلینیکل ٹرائلز دو ہفتوں میں شروع ہوجائیں گے۔(۔۔۔)
اتوار 19 شعبان المعظم 1441 ہجرى - 12 اپریل 2020ء شماره نمبر [15111]

انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا