امریکہ میں "نسل پرستی" کے خلاف دنیا بھر میں مظاہرے

امریکہ میں "نسل پرستی" کے خلاف دنیا بھر میں مظاہرے

اتوار, 7 June, 2020 - 15:00
کل لندن میں برطانوی پارلیمنٹ کی عمارت کے سامنے ریاست ہائے متحدہ امریکہ کے احتجاج سے یکجہتی کرتے ہوئے بڑی بھیڑ کو دیکھا جا سکتا ہے (آئی بی اے)
ایک طرف اقوام متحدہ میں انسانی حقوق کے 66 ماہرین کے ایک گروپ نے "عصری نسل پرست دہشت گردی کے قتل" کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ افریقی امریکیوں کو اب بھی امریکہ میں اس طرح کے واقعات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے تود وسری طرف دنیا کے بڑے شہروں میں سیاہ فام شخص جارج فلائیڈ کے قتل کے خلاف احتجاجی مظاہرے ہو رہے ہیں جسے پچھلے ہفتے منیپولیس شہر میں پولیس کے ہاتھ قتل کر دیا گیا ہے۔

کورونا وائرس سے متعلق انتباہات کے باوجود دنیا بھر کے مظاہرین ایک بار پھر سڑکوں پر نکل آئے ہیں اور امریکہ میں مظاہرین سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے کل آسٹریلیا کے متعدد شہروں میں دسیوں ہزار افراد جمع ہوئے ہیں اور بہت سے مظاہرین نے دیسی جھنڈا بھی لے رکھا تھا اور بہت سے لوگوں نے اپنے چہرے پر ماسک لگا رکھا تھا جس پر لکھا تھا کہ "میں سانس نہیں لے سکتا" کیونکہ یہی وہ آخری الفاظ ہیں جو فلائیڈ نے کہے تھے۔(۔۔۔)


اتوار 15 شوال المکرم 1441 ہجرى - 07 جون 2020ء شماره نمبر [15167]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا