اردوغان کی طرف سے ترکی کے نصف گورنرز کے عہدے میں تبدیلی

اردوغان کی طرف سے ترکی کے نصف گورنرز کے عہدے میں تبدیلی

جمعرات, 11 June, 2020 - 13:15
ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان کو دیکھا جا سکتا ہے
ترک صدر رجب طیب اردوغان نے ملک کی 81 ریاستوں میں سے 41 ریاستوں میں نصف گورنروں کو برخاست کرکے ان کی جگہ دوسروں کی تقرری اور تبادلے کے فیصلوں سے ملک کی نصف ریاستوں (گورنریٹس) کے ڈھانچے میں کافی تبدیلی کی ہے جبکہ فوج اور پولیس کو خاص طور پر نشانہ بنانے والی شدید گرفتاری مہم 3 دن تک جاری رہی ہے۔

"جمہوریت اور ترقی پارٹی" نامی حزب اختلاف کے سربراہ علی باباجان نے اردوغان حکومت کے ان طریق کار پر تنقید کی ہے جن سے ان کے بقول بین الاقوامی سطح پر ترکی کی ساکھ کھوئی جا رہی ہے اور اس کے رہنماء غربت کی طرف جارہے ہیں۔


کل بدھ کے روز ترکی کی سرکاری گزٹ نے اردوغان کے جاری کردہ احکامات کا ایک سلسلہ شائع کیا ہے جس میں 18 نئے گورنروں کی تقرری، ریاستوں کے مابین 23 دیگر افراد کے تبادلے اور مختلف وزارتوں 17 گورنروں کو ہٹائے جانے کے بعد ان کی جگہ دیگر گورنروں کی تقرری ہوئی ہے جبکہ ان میں موغلا ریاست (مغربی ترکی کے جنوب) کے گورنر کی تقرری بھی شامل ہے جو ترک صدر کے سینئر مشیروں کی ٹیم کا ایک حصے تھے۔(۔۔۔)


جمعرات 19 شوال المکرم 1441 ہجرى - 11 جون 2020ء شماره نمبر [15171]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا