درعا میں روسی وفاداروں کے جنازے کے دوران ایران اور حزب اللہ کے خلاف احتجاج

درعا میں روسی وفاداروں کے جنازے کے دوران ایران اور حزب اللہ کے خلاف احتجاج

پیر, 22 June, 2020 - 16:30
دو سال قبل شامی حکومت کے ذریعہ درعا پر کنٹرول قائم کرنے کے بعد سب سے بڑے مظاہرے کے منظر کو دیکھا جا سکتا ہے (شامی رصدگاہ)
روس کی طرف سے تشکیل کردہ اور نگرانی میں موجود "پانچویں کور" کے اہلکار اور ہزاروں عام شہری گزشتہ روز شامی حکومت کے خاتمے اور شام سے "حزب اللہ" اور ایرانیوں کے انخلا کا مطالبہ کرتے ہوئے صوبہ درعا کے شہر بصری الشام میں ایک زبردست مظاہرہ میں نکلے ہیں اور انہوں نے اسد کنبہ اور شامی حکومت کے سربراہ کے خلاف نعرے لگائے ہیں اور گزشتہ ہفتے بس پر ہونے والے بمباری میں مارے گئے درعا کے دیہی علاقوں کے متعدد شامی فوجیوں کی آخری رسومات کی تقریب بڑے پیمانے پر غم وغصے کے مظاہرہ میں بدل گئی اور جب سے شامی حکومت نے درعا گورنریٹ پر سنہ 2018 میں دوبارہ اقتدار حاصل کیا ہے اس وقت سے لیکر اب تک کا یہ بہت بڑا مظاہرہ ہوا ہے۔

"احرار حوران گروپ" کے ذریعہ پوسٹ کی جانے والی ویڈیوز میں شیعہ شرکاء کو حکومت کے خاتمے اور حزب اللہ اور ایران کی روانگی کا مطالبہ کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔(۔۔۔)


پیر 01 ذی القعدہ 1441 ہجرى - 22 جون 2020ء شماره نمبر [15182]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا