ایران عراقی کردستان کی سرحدوں پر اپنی افواج کو اکٹھا کررہا ہے

ایران عراقی کردستان کی سرحدوں پر اپنی افواج کو اکٹھا کررہا ہے

بدھ, 24 June, 2020 - 13:45
پرسو روز عراق کے کردستان کے علاقے کے دھوک گورنریٹ میں واقع شيلادزى میں ترک فضائی حملے کے نتیجے میں ہلاک ہونے والے کرد شہری کے جنازے کے دوران خواتین کو روتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (روئٹر)
گزشتہ روز ایک طرف اطلاعات میں خطے میں جاری ترک فوجی کارروائیوں کے ساتھ عراقی کردستان کی سرحدوں پر ایرانی فوج کی تشکیل کی بات کی گئی ہے تو دوسری طرف تنخواہوں کے بحران سے اربیل حکومت کو لاحق خطرہ کی بھی بات کی گئی ہے۔

"روڈاو" میڈیا نیٹ ورک کے مطابق ایرانی پاسداران انقلاب نے خطے کی سرحدوں پر ایک بڑی فورس کو متحرک کردیا ہے تاکہ خطے کی سرزمین کے اندر ایرانی کردستان پارٹیوں کے صدر مقام اور ٹھکانوں کو نشانہ بنایا جاسکے اور اس میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ عراق کے کردستانی علاقے کی سرحدوں سے متصل علاقے مریوان میں ان افواج کے لئے فوجی مشقوں کے انعقاد کے مقام پر منعقدہ ایک میٹنگ کے دوران ایرانی پاسداران انقلاب کے کمانڈر محمد باکربور نے کہا ہے کہ جیسا انہوں نے پچھلے سالوں میں کیا ہے وہ عراق اور کردستان کے خطے میں مخالف قوتوں کے ہیڈ کوارٹرز اور مقامات کو نشانہ بنانے جا رہے ہیں۔(۔۔۔)


بدھ 03 ذی القعدہ 1441 ہجرى - 24 جون 2020ء شماره نمبر [15184]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا