جرمنی میں اردوغان کے ایجنٹوں کی گہری سرگرمی

جرمنی میں اردوغان کے ایجنٹوں کی گہری سرگرمی

جمعرات, 2 July, 2020 - 12:00
اردوغان کے ذریعہ سنہ 2018 میں ترک کولون مسجد کے نام سے کھولی گئی یوروپ کی سب سے بڑی سنٹرل مسجد کے منظر کو دیکھا جا سکتا ہے (مسجد کی ویب سائٹ)
جرمن داخلہ اور امیگریشن سروس سے "الشرق الاوسط" کے ذریعہ حاصل کردہ سرکاری اعداد وشمار کے مطابق سنہ  2016 میں ہونے والی بغاوت کی کوشش کے بعد سے جرمنی میں ترک پناہ گزینوں کی تعداد میں ڈرامائی طور پر اضافہ ہورہا ہے اور اس وقت سے گزشتہ سال تک پناہ کے متلاشی افراد کی تعداد 36 ہزار سے بھی زائد ہے جبکہ اس سے پہلے کے سالوں میں 2000 سے کم پناہ گزینوں کی درخواستیں موصول ہوئی ہیں۔

جیسے ہی پناہ مانگنے والوں اور مخالفین کی تعداد بڑھتی جارہی ہے ویسے ہی ان مخالفین کی جاسوسی کرنے والے افراد کی تعداد میں بھی اضافہ ہو رہا ہے اور ترکی کے انٹلیجنس امور کے ایک جرمنی ماہر ایریک شمٹ اینبم «الشرق الاوسط» کو ایک بیان دیتے ہوئے اندازہ لگایا ہے کہ جرمنی میں 8 ہزار ترک ایجنٹ کام کر رہے ہیں جنہیں انقرہ بھرتی کرتا ہے اور جرمنی میں تقریبا 40 لاکھ ترک آباد ہیں جن میں سے بیشتر دوسری جنگ عظیم کے بعد مہمان کارکن" بن کر آئے تھے اور وہیں مقیم ہو گئے۔(۔۔۔)


جمعرات 11 ذی القعدہ 1441 ہجرى - 02 جولائی 2020ء شماره نمبر [15192]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا