متحدہ عرب امارات نے فیصلے کو تیز کرنے کے لئے اپنے حکومتی ڈھانچے کو کیا تبدیل

متحدہ عرب امارات نے فیصلے کو تیز کرنے کے لئے اپنے حکومتی ڈھانچے کو کیا تبدیل

پیر, 6 July, 2020 - 14:45
فیصلے کو تیز کرنے کے مقصد کے ساتھ ہی متحدہ عرب امارات نے کل اپنی حکومت کے لئے ایک نئے ڈھانچے کی تشکیل کا انکشاف کیا ہے اور حکومت کے صدر شیخ خلیفہ بن زاید آل نہیان کی طرف سے منظور شدہ حکومت کی تبدیلی میں 50 فیصد خدمت کے سرکاری مراکز کو منسوخ کرنا اور دو سالوں میں ڈیجیٹل پلیٹ فارم میں تبدیل کرنا اور 50 فیڈرل ایجنسیوں کو ایک دوسرے کے ساتھ یا وزارتوں کے اندر ضم کرنا شامل ہے اور نئے حکومتی وزارتی عہدے بنانے کے علاوہ خصوصی شعبوں میں سی ای او کے عہدے پیدا کرنا بھی ہے۔

متحدہ عرب امارات کے نائب صدر اور وزیر اعظم اور دبئی کے حکمران شیخ محمد بن راشد آل مکتوم نے اعلان کیا ہے کہ نئی تنظیم کابینہ کی تشکیل نو کے لئے ابوظہبی کے ولی عہد اور مسلح افواج کے ڈپٹی سپریم کمانڈر شیخ محمد بن زائد آل نہیان کے ساتھ ہونے والے مشوروں کے بعد سامنے آئی ہے کیوںکہ اسی کے مطابق شیخ محمد بن راشد نے گزشتہ مئی میں متحدہ عرب امارات کے اس حکومتی اجلاس کی سرگرمیوں کے اختتام کے موقع پر اعلان کیا ہے جو اون لائن "کوویڈ 19 کے بعد کی تیاری" کے عنوان سے منعقد ہوا تھا اور اس میں 100 سے زائد وفاقی اور مقامی سرکاری ایجنسیوں کے عہدیداروں نے شرکت کی تھی۔(۔۔۔)


پیر 15 ذی القعدہ 1441 ہجرى - 06 جولائی 2020ء شماره نمبر [15196]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا