شام میں پراسرار ہلاکتوں میں مہر الاسد کے قریبی لوگوں کو بنایا گیا نشانہ

شام میں پراسرار ہلاکتوں میں مہر الاسد کے قریبی لوگوں کو بنایا گیا نشانہ

بدھ, 8 July, 2020 - 15:00
شام کے صدر کے بھائی مہر الاسد کو دیکھا جا سکتا ہے
شام میں گزشتہ دو ہفتوں کے دوران پراسرار حالات میں 8 فوجی اہلکاروں کی ہلاکت کا مشاہدہ ہوا ہے جن میں سے اسی پیر کے روز حکومت کی افواج کے چوتھے ڈویژن کی ملیشیاؤں کے کمانڈر نزار زيدان کی ہلاکت کا اعلان کیا گیا ہے اور ہلاک ہونے والوں میں سے 5 بریگیڈیئر جنرل کے عہدے پر فائز تھے اور ان میں وہ بھی شامل ہیں جن کو ان کے گھر یا دفتر کے سامنے گولی مار کر ہلاک کردیا گیا ہے اور ان میں سے چار کا قتل دمشق اور اس کے دیہی علاقوں میں کیا گیا ہے۔

ان حملوں میں شام کے صدر کے بھائی مہر الاسد کے قریبی افراد کو نشانہ بنایا گیا ہے۔


گزشتہ ہفتہ کے دن چوتھے ڈویژن کے کمانڈر ماہر الاسد کے ساتھی کرنل علی جنبلاط کو نشانہ بنایا گیا ہے جنہیں یعفور میں ان کے گھر کے سامنے گولی مار کر ہلاک کردیا گیا ہے اور اسی طرح مشرقی صوبے میں فضائیہ کی انٹلیجنس برانچ کے سربراہ بریگیڈیئر جنرل جہاد زعل کو ہفتہ اور اتوار کی رات ان کے متعدد ساتھیوں سمیت قتل کر دیا گیا ہے۔(۔۔۔)


بدھ 17 ذی القعدہ 1441 ہجرى - 08 جولائی 2020ء شماره نمبر [15198]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا