حکومت کے حامی شام کے انتخابات میں مرنے والوں کی شرکت کے بارے میں بات کی ہے

حکومت کے حامی شام کے انتخابات میں مرنے والوں کی شرکت کے بارے میں بات کی ہے

جمعرات, 23 July, 2020 - 14:15
جوڈیشل کمیٹی کے چیئرمین سامر زمرق کو پارلیمانی انتخابات کے نتائج کا اعلان کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے (آئی بی اے)
بیروت - انقرہ - لندن: "الشرق الاوسط"
انقلاب کا گہوارہ سمجھا جانے والا درعا گورنریٹ سے پارلیمانی انتخابات کے لئے آزاد امیدواروں نے صدر بشار الاسد کے سامنے ایک درخواست جمع کرائی ہے جس میں انہوں نے ووٹوں میں ہونے والی بے ضابطگیوں کی وجہ سے انتخابی نتائج پر اعتراض کیا ہے اور ان میں مرنے والوں، لاپتہ اور بے گھر ہونے والے افراد کی شرکت کا معاملہ بھی ہے۔

منگل تا بدھ کی درمیانی شب میں ان انتخابات کے نتائج کا اعلان کیا ہے جس میں ووٹ ڈالنے کے حقداروں میں سے 33 فیصد والوں نے حصہ لیا ہے اور حکمران "بعث پارٹی" اور اس کے اتحادی 250 نشستوں میں سے 177 نشستوں کے ساتھ "قومی اتحاد" کی فہرست میں شامل ہو گئے ہیں۔


نتائج کا اعلان ہونے کے بعد ہی اعتراضات کا سلسلہ شروع ہو گیا اور متعدد آزاد امیدواروں نے اسد کو خط بھیجا ہے جس میں انہوں نے ملک کے جنوب میں رائے دہندگی کے دوران ہونے والی خلاف ورزیوں کا اندراج کیا ہے اور اس میں اس بات کا بھی ذکر کیا ہے کہ انتخابی کمیٹیوں کے سربراہان اور مندوبین نے نتائج کو جھوٹا بنانے کے بدلے میں مالی رشوت وصول کی ہے اور تقسیم فہرستوں کی بنیاد پر ووٹرز کی تعداد میں اضافہ بھی کیا ہے۔(۔۔۔)


جمعرات 02 ذی الحجہ 1441 ہجرى - 23 جولائی 2020ء شماره نمبر [15213]


انتخاباتِ مدير

ملٹی میڈیا